مشال خان کے قتل کے بعد مشتعل افراد کی ایک دوسرے کو مبارکباد،تحریک انصاف کے تحصیل کونسلر نے نام نہ بتانے کا حلف لیا

مشال خان کے قتل کے بعد مشتعل افراد کی ایک دوسرے کو مبارکباد،تحریک انصاف کے ...
مشال خان کے قتل کے بعد مشتعل افراد کی ایک دوسرے کو مبارکباد،تحریک انصاف کے تحصیل کونسلر نے نام نہ بتانے کا حلف لیا

  

مردان(ڈیلی پاکستان آن لائن)مشال خان کے قتل کے بعد مشتعل افراد کی ایک دوسرے کو مبارکباد دینے کی ویڈیو منظر عام پر آگئی ہے جس میں تحریک انصاف کے تحصیل کونسلر عارف کی جانب سے تقریر کی جارہی ہے اور مشتعل افراد سے گولی مارنے والے کا نام نہ لینے کا حلف لیا جارہا ہے۔تفصیلات کے مطابق مردان کی یونیورسٹی میں طالبعلم کو قتل کرنے کے بعد کی ایک ویڈیو منظر عام پر آئی ہے جس میں مشتعل افراد کا ایک گروپ قتل کے بعد ایک دوسرے کو مبارکباد دیتے ہوئے نظر آرہا ہے اور مشال خان کا نام لئے بغیرکہا جارہا ہے کہ ہم نے وہ کام کردیاہے جو ہم کرنا چاہتے تھے.

مشال خان قتل کیس،تحقیقاتی رپورٹ سپریم کورٹ میں جمع کرادی گئی

مشتعل افراد نے ایف آئی آر میں گولی مارنے والے کا نام نہ بتانے اور  ایک دوسرے کا نام نہ لینے کا حلف اٹھایا ہے اور کہا کہ اگر کسی نے نام بتایا تو اس کو غدار سمجھا جائے گا۔پولیس کی جانب سے اس بات کی تصدیق نہیں کی گئی ہے کہ ویڈیو میں حلف اٹھانے والے افراد مشال خان کے قتل میں ملوث ہیں۔پی ٹی آئی کے رہنما  اور صحافی ایاز خان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر ایک ویڈیو شیئر کرتے ہوئے کہا کہ ’’پی ٹی آئی کے کونسلر عارف کی جانب سےمبارکباد دی جارہی ہے اور پولیس کو ایک دوسرے کا نام نہ  بتانے کا عہد کیا جارہا ہے‘‘۔واضح رہے کہ ویڈیو میں تقریر کرنے والا شخص عارف پی ٹی آئی کا تحصیل کونسلر ہے جو کہ مشال خان کے قتل کے دو دن بعد گرفتار ہوچکا ہے۔

یاد رہے کہ مردان کی عبدالولی خان یونیورسٹی میں شعبہ صحافت کے طالبعلم مشال خان کو توہین مذہب کے الزام میں طلباء کی طرف سے تشدد کرکے قتل کردیا گیا تھا۔

مزید :

مردان -