بھکھی پاور پلانٹ ٹرائل رن کے دوران ہی نیشنل گرڈ سے منسلک کرنے پر ٹربائن اڑ گئی ، 700میگاواٹ سسٹم سے آ ؤٹ

بھکھی پاور پلانٹ ٹرائل رن کے دوران ہی نیشنل گرڈ سے منسلک کرنے پر ٹربائن اڑ ...
بھکھی پاور پلانٹ ٹرائل رن کے دوران ہی نیشنل گرڈ سے منسلک کرنے پر ٹربائن اڑ گئی ، 700میگاواٹ سسٹم سے آ ؤٹ

  

 لاہور(ویب ڈیسک) اپریل کے مہینے میں ملکی تاریخ کی بد ترین لوڈ شیڈنگ پر حکومت کے ہاتھ پاؤں پھول گئے ہیں،لوڈ شیڈنگ کیخلاف شدید عوامی رد عمل سے بوکھلاہٹ کا شکار پنجاب حکومت نے گیس پر چلنے والے بھکھی پاور پلانٹ کو‘‘ٹرائل رن’’ کے دوران ہی نیشنل گرڈ سے منسلک کر دیا جس سے بھکھی پاور پلانٹ کی ٹربائن اڑ گئی اور پورا پلانٹ ٹرپ کر گیا۔

روزنامہ دنیا کے مطابق آر ایل این جی پر چلنے والے بھکھی پاور پلانٹ نے پہلے مرحلے میں 800 میگاواٹ بجلی پیدا کرنا تھی جو تجرباتی بنیادوں پر 700 میگاواٹ پروڈیوس کر رہا تھا جسے بجلی کے قومی نظام سے منسلک کرنے سے پہلے تجربے کے مخصوص عمل سے گزارا جانا لازم تھا ، تاہم توانائی بحران کے خاتمے کا نعرہ لگا کر حکومت بنانیوالی مسلم لیگ ن کو شدید عوامی ردعمل کے پیش نظر پلانٹ کو نیشنل گرڈ سے منسلک کرنے کا فیصلہ الٹا پڑ گیا، نیشنل گرڈ سے منسلک کرنے کے بعد پلانٹ کی ٹربائن اڑ گئی اور 700 میگاواٹ بجلی کی پیداوار بھی کئی روز کیلئے سسٹم سے نکل گئی ۔ اس حوالے سے قائد اعظم تھرمل پاور لمیٹڈکے چیف ایگزیکٹواحد چیمہ نے تصدیق کی کہ بھکھی پاور پلانٹ سے پیداوار بجلی کے قومی نظام میں شامل نہیں ہو سکی تاہم ٹرائل رن کے دوران پلانٹ ٹرپ کرجانا غیرمعمولی بات نہیں ، بھکھی پاور پلانٹ کو ایک آدھ روز میں دوبارہ چلا دیا جائیگا۔

دوسری جانب لیسکو کے اعلیٰ حکام نے بتایا کہ بھکھی پاور پلانٹ کو ٹرائل رن کے دوران نیشنل گرڈ سے منسلک کرنا بہت بڑا ‘‘بلنڈر’’ تھا جس کے نتیجے میں 700 میگاواٹ بجلی کا خسارہ ہوا۔واضح رہے کہ بھکھی پاور پلانٹ درآمدی گیس سے چلنے والا پنجاب حکومت کا منصوبہ ہے جو پہلے سے التواء کا شکار ہے ، اس کی تکمیل کیلئے وزیر اعلیٰ پنجاب گزشتہ کئی ماہ کے دوران مختلف اوقات میں مختلف تاریخیں دیتے رہے ہیں۔

مزید :

بزنس -