مشال خان قتل کیس میں ملوث7یونیورسٹی ملازمین کو معطل کردیا گیا

مشال خان قتل کیس میں ملوث7یونیورسٹی ملازمین کو معطل کردیا گیا
مشال خان قتل کیس میں ملوث7یونیورسٹی ملازمین کو معطل کردیا گیا

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) مردان یونیورسٹی میں طالبعلم مشال کے قتل  کیس میں گرفتار26ملزمان میں سے7یونیورسٹی ملازمین بھی شامل ہیں جنہیں یونیورسٹی انتظامیہ نے معطل کردیا ۔

بھارتی بز نس مین گرفتاری کے چند منٹوں بعد ضمانت پر رہا

تفصیلات کے مطابق خان عبدالولی خان یونیورسٹی میں مشتعل طلبا کے ہاتھوں قتل ہونے والے صحافت کے طالب علم مشال خان کے قتل میں ملوث یونیورسٹی کے 7 ملازمین کو معطل کردیا گیا۔ رجسٹرار نے 7 ملازمین کی معطلی کے احکامات جاری کرتے ہوئے ان کی تنخواہیں بھی روک لی ہیں جب کہ ان تمام افراد کو پولیس پہلے ہی حراست میں لے چکی ہے۔ معطل شدہ ملازمین میں سپرٹنڈنٹ افسر خان، سٹور کیپر سجاد علی، آفس اسسٹنٹ محمد اجمل ، انس علی سانگر، علی خان ، سینئر کلرک حنیف احمد اور اٹینڈنٹ نواب علی شامل ہیں ۔

بچوں کے رشتوں کیلئے پریشان والدین اس وقت یہ سورت پڑھیں

واضح رہے کہ  مشال خان قتل کیس میں اب تک 26 ملزمان کو گرفتار کیا جا چکا ہے جن میں یونیورسٹی کے 7 ملازمین بھی شامل ہیں جبکہ واقعے کے مرکزی ملزم وجاہت نے اعترافی بیان دیدیا ہے۔ سپریم کورٹ نے واقعے پر ازخود نوٹس لیتے ہوئے آئی جی کے پی کے سے 36 گھنٹے میں تحقیقاتی رپورٹ طلب کی تھی۔جو کہ آج انہوں نے سپریم کورٹ میں جمع کرادی تھی.

مزید :

قومی -