ایک ہی جھٹکے میں سعودی عرب سے 10 لاکھ غیر ملکیوں کی چھٹی ہوگئی، انتہائی پریشان کن خبر آگئی

ایک ہی جھٹکے میں سعودی عرب سے 10 لاکھ غیر ملکیوں کی چھٹی ہوگئی، انتہائی پریشان ...
ایک ہی جھٹکے میں سعودی عرب سے 10 لاکھ غیر ملکیوں کی چھٹی ہوگئی، انتہائی پریشان کن خبر آگئی

  

ریاض (مانیٹرنگ ڈیسک) سعودی عرب میں غیر قانونی قیام کا دور ختم ہوگیا اور جلد ہی غیر قانونی طورپر مقیم غیر ملکیوں کی اتنی بڑی تعداد مملکت سے نکلنے والی ہے کہ آپ جان کر حیران رہ جائیں گے۔ سعودی عرب میں خلاف قانون قیام کرنے والوں کو دی گئی مہلت کے خاتمے میں اب صرف 70 روز بچے ہیں، اور حکام کا کہنا ہے کہ اس مہلت کے اختتام تک تقریباً 10 لاکھ غیر ملکی مملکت سے روانہ ہوچکے ہوں گے۔

خصوصی سکیم کے تحت غیر قانونی طور پر مملکت میں موجود غیرملکی افراد کو بغیر کسی جرمانے یا سزا کے اپنے وطن واپس جانے کی اجازت ہے۔ ان کے فنگر پرنٹ بھی نہیں لئے جائیں گے، تاکہ وہ بعدازاں قانونی طریقے سے مملکت میں داخل ہوسکیں۔ عرب نیوز کی رپورٹ کے مطابق مملکت کے 19 ادارے مل کر کام کررہے ہیں تاکہ دی گئی مہلت کے دوران 10 لاکھ غیر ملکیوں کو مملکت سے روانہ کیا جاسکے۔

سعودی عرب سے پاکستانیوں کے لئے سب سے تشویشناک خبر آگئی، وہ شعبہ جس میں سب سے زیادہ پاکستانی کام کرتے ہیں، اب اُس سے بھی تمام غیر ملکیوں کو نکالنے کا فیصلہ ہوگیا

اس سکیم کا آغاز پہلی بار چار سال قبل کیا گیا تھا اور اب تک اس کے تحت 55 لاکھ سے زائد غیر قانونی قیام کرنے والے افراد کو واپس بھیجا جاچکا ہے۔ محکمہ پاسپورٹ اپنے ٹویٹر اکاﺅنٹ پر اردو، انگریزی، انڈونیشیائی اور دیگر زبانوں میں غیر ملکیوں کو مسلسل اطلاع دے رہا ہے کہ کس طرح وہ دی گئی مہلت سے فائدہ اٹھاتے ہوئے باآسانی مملکت سے واپس جاسکتے ہیں۔

مملکت کے 13 صوبوں میں قائم کئے گئے 80 مراکز پر روزانہ غیرملکیوں کی بڑی تعداد پہنچ رہی ہے۔ سعودی حکام توقع کررہے ہیں کہ لاکھوں غیر ملکیوں کے واپس جانے پر نہ صرف قانونی معیشت کو مضبوطی ملے گی بلکہ سعودی شہریوں کے لئے روزگار کے مواقع میں بھی اضافہ ہوجائے گا۔

مزید :

عرب دنیا -