سنگین مقدمات میں ملوث خطرناک ملزمان کے ویڈیو ٹرائل کا فیصلہ

سنگین مقدمات میں ملوث خطرناک ملزمان کے ویڈیو ٹرائل کا فیصلہ
سنگین مقدمات میں ملوث خطرناک ملزمان کے ویڈیو ٹرائل کا فیصلہ

  

لاہور(نامہ نگار)سنگین مقدمات میں ملوث خطرناک ملزمان کو جیل سے لانے کی وجہ سے سکیورٹی خدشات کے پیش نظر ان کے مقدمات کی سماعت ویڈیو ٹرائل کا فیصلہ ۔

ٹیپو ٹرکاں والا کے بیٹے امیر بالاج ٹیپو کو 3 روزہ جسمانی ریمانڈ پر سی آئی اے کے حوالے کردیا گیا 

اس ضمن میں ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج لاہورعابد حسین قریشی نے تمام ایڈیشنل سیشن ججزکو ہدایات جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ خطرناک ملزمان جن کاجیل سے نکالنامشکل ہے ،ایسے کیسوں کی سماعت ویڈیوٹرائل کورٹ میں کی جائے۔سیشن کورٹ میں ویڈیو ٹرائل کورٹ قائم کی گئی ہے جس کامقصدخطرناک ملزمان کے کیسزکی سماعت جیل سے براہ راست ویڈیو ٹرائل کے ذریعے کرنامقصود ہے ،اسی طرح جیل میں بھی باقاعدہ ویڈیوٹرائل کورٹ قائم کی گئی ہے جہاں ملزم کو سکرین کے سامنے بیٹھا دیاجاتا ہے اور سیشن کورٹ کی ویڈیوٹرائل کورٹ میں ملزم کے وکلاءاور گواہ اسے سکرین پردیکھ سکتے ہیں،ملزم کی موجودگی میں وکلاءجرح بھی کرسکتے ہیں،اس حوالے سے قانونی ماہرین کا کہناہے کہ ویڈیوٹرائل کورٹ سے وقت کی بچت ہونے کے ساتھ ساتھ ملزم کولانے اور لے جانے کے لئے سیکیورٹی کی پابندی ختم ہوگی، واضح رہے کہ سنگین مقدمات میں ملوث خطرناک ملزمان کو سیکیورٹی فراہم کرنا بھی ایک سنگین مسئلہ تھا جس کے پیش نظرانتظامیہ نے مذکورہ بالا فیصلہ کیا ہے ۔

مزید :

لاہور -