کرپشن اور بد انتظامی موجودہ نظام کا ہی تحفہ ہیں

کرپشن اور بد انتظامی موجودہ نظام کا ہی تحفہ ہیں

لاہور (پ ر) چیئرمین پاکستان عوامی تحریکِ انقلا ب پروفیسر آفتاب لودھی نے استفسار کیا کہ قومی وسائل کی لوٹ مار کب تک جاری رہے گی؟گزشتہ روز تحریک کی اقتصادی کمیٹی سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ قومی ادارے اور منصوبے تباہ ہوگئے اور سینکڑوں ارب روپے کے خسارہ سے دیوالیہ ہو گئے۔انہوں نے کہا کہ پی آئی اے 45 ارب روپے،سٹیل مل 177ارب روپے ،ریلوے 60 ارب روپے کے خسارے میں ڈوب چکے ہیں اور قومی معیشت مسلسل اربوں روپے کے نقصان میں جا رہی ہے۔نیو اسلام آباد ائیرپورٹ،اورنج ٹرین، میٹرو بس لاہور،راولپنڈی اور ملتان میں بھی بڑے پیمانے پر کرپشن کے تذکرے زبان زد عام ہیں۔انہوں نے کہا کہ یہ قرضے ، کرپشن،منی لانڈرنگ اور بدانتظامی موجودہ جمہوری نظام کے ہی تحائف ہیں اور کسی جمہوری حکومت نے ان کی بہتری کے لئے خاطر خواہ اقدامات نہیں کئے ۔ انہوں نے پی آئی اے، سٹیل مِل، ریلوے اور سانحہ ماڈل ٹاؤن کیسز پر سومووٹو نوٹس لینے اور ذمہ داروں کے محاسبے کی کاروائی پر سپریم کورٹ اور نیب کو بھی خراج تحسین پیش کیا۔ انہوں نے کہا کہ پہلی بار ملک میں کرپشن مافیا پر عدالت عظمیٰ نے مضبوط ہاتھ ڈالا ہے۔ پروفیسر آفتاب لودھی نے سپریم کورٹ کے جج پر حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ یہ حملہ عدالت عظمیٰ کو خائف کرنے کی کوشش ہے

مزید : میٹروپولیٹن 1