سندس فاؤنڈیشن میں ہیمو فیلیا کے عالمی دن پر تقریب،بچوں میں تحائف تقسیم

سندس فاؤنڈیشن میں ہیمو فیلیا کے عالمی دن پر تقریب،بچوں میں تحائف تقسیم

لاہور(جنرل رپورٹر)سُندس فاؤنڈیشن میں ہیموفیلیا کے عالمی دن کے حوالے سے ایک تقریب کا انعقاد کیا گیا جس میں خالدعباس ڈار، سہیل وڑائچ سمیت مختلف کالجز اور یونیورسٹیز کے پرنسپل اور ڈائریکٹرز صاحبان نے بطور مہمانِ خصوصی شرکت کی اور ہیمو فیلیا کے بچوں کی عیادت کرتے ہوئے اُن میں ادویات اور تحائف بھی تقسیم کئے، اِس موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے اُنہوں نے کہا کہ تھیلے سیمیا، ہیموفیلیا اور بلڈکینسر کے مریضو ں کے علاج و معالجہ کے لئے ہم اپنی ذاتی حیثیت میں ہر ممکن مالی امداد کو یقینی بنائیں گے یہ بچے بھی عام بچوں کی طرح زندگی گزار سکیں۔ہیمو فیلیا کے عالمی دِن کی مناسبت سے ڈاکٹرز اور پروفیسر صاحبان نے میڈیا کوآسان الفاظ میں اس بیماری کے بارے میں بتایا کہ ہیموفیلیا خون کی ایسی موروثی اور جینیاتی بیماری ہے جس میں خون کے جمنے کی صلاحیت متاثر ہوتی ہے۔اس مرض کی علامات میں بہتے ہوئے خون کا نہ رُکنا واضح علامت ہے، ایک صحت مند انسان کا چوٹ یا زخم کی صورت میں خون بہتا اور پھر کچھ دیر میں خود با خود رُک جاتا ہے جبکہ ہیموفیلیا سے متاثرہ افراد کا خون نہ صرف بیرونی چوٹ کی صورت میں بہتا رہتا ہے بلکہ چوٹ لگنے کی صورت میں جسم کے اندر بھی خون بہنے کا عمل جاری رہتا ہے، جو جوڑوں کی خرابی کا باعث بنتا ہے ۔ ایک محتاط اندازے کے مطابق تقریباً ہر5,000میں سے ایک بچہ ہیموفیلیا) اے(اور ہر40,000 میں سے ایک بچہ ہیموفیلیا)بی( ہوتا ہے، پاکستان میں متاثرہ افراد کی تعدادتقریباً 5لاکھ ہے، جبکہ دنیا بھر میں ہیموفیلیا مریضوں کے رجسٹرڈنہ ہونے کی وجہ سے اِن کی تعداد کا تعین مشکل ہے۔ اس مرض کی بڑھتی ہوئی شرح کی بنیادی وجہ مرض سے لاعلمی ہے۔ پاکستان میں ان بیماریوں میں مبتلا مریضوں کیلئے بہت سے ادارے کام کر رہے ہیں جن میں سُندس فاؤنڈیشن کا نام سرفہرست ہے جوکہ ہیموفیلیا میں مبتلا مریضوں کو نا صرف بروقت صحت مند خون مہیا کرتا ہے۔آخر میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے صدر سُندس فاؤنڈیشن محمد یاسین خان نے کہا کہ سُندس فاؤنڈیشن بہت جلد مخیر حضرات کے تعاون سے ایک ہسپتال کی تعمیر شروع کرنے جارہا ہے جہاں مختلف میڈیکل شعبہ جات مثلاً ایمرجنسی،میڈیکل وارڈز، آئی سی یو، سی سی یو اور �آپریشن تھیٹر وغیرہ کی سہولیات ایک چھت کے نیچے فراہم کی جائیں گی۔

مزید : میٹروپولیٹن 1