دیر بالا بین درہ براؤل کی چھ سالہ بچی کے قتل کا معمہ حل ہو گیا

دیر بالا بین درہ براؤل کی چھ سالہ بچی کے قتل کا معمہ حل ہو گیا

واڑی(نمائندہ پاکستان) دیر بالا بین درہ براؤل کی چھ سالہ بچی کے قتل کا معمہ حل ہو گیا بچی کی والدہ نے اپنے بہو پردعویداری کر دی واقعات کے مطابق گزشتہ رات افغان بارڈر کے قریب نورخیل بین درہ میں ایک چھ سالہ بچی سمیعہ دخترعمرخان کو ذبح کرکے بے دردی سے قتل کر دیا گیاتھا بچی کو قتل کرنے کے بعد پولیس کے علی ٰ حکام حرکت میں آگئے بچی کو میڈیکل کے لئے ڈی ایچ کیو ہسپتال دیر لایا گیا اس بارے میں جب ڈی ایچ کیو دیر کے لیڈی ڈاکٹر بشری ٰ نورین سے رابطہ کیا گیا ہے تو انہوں نے بتایا کہ بچی کے ساتھ کوئی جنسی زیادتی ثابت نہیں ہوئی تاہم اس کے گلے پر گہرے زخم موجود تھے ادھر تھانہ براؤل پولیس نے بچی کے والدہ مسماۃ(ف) کی مدعیت میں اپنے بہو مسماۃ(ص) زوجہ عثمان کے خلاف دعویداری کردی ہے پولیس نے واقعے کو دیرینہ دشمنی کا شاخسانہ قرار دیا ہے اور کہا ہے کہ واقعے کی ہر زاوئے سے مزید تفتیش جاری ہے جبکہ مقتولہ کا والدعمرخان جو کراچی میں محنت مزدوری کے سلسلے میں مقیم تھا گھر پہنچ گیا ہے

B

مزید : کراچی صفحہ اول