فاٹا سیکرٹریٹ سے معذوروں کے کوٹے پر عملدر آمد سے متعلق رپورٹ طلب

فاٹا سیکرٹریٹ سے معذوروں کے کوٹے پر عملدر آمد سے متعلق رپورٹ طلب

پشاور(نیوزرپورٹر)پشاورہائی کورٹ کے چیف جسٹس یحیی آفریدی اور جسٹس روح الامین پرمشتمل دورکنی بنچ نے وفاقی اورصوبائی حکومتوں اورفاٹاسیکرٹریٹ سے معذوروں کے کوٹے پرعملدرآمد سے متعلق جامع جواب مانگ لیاہے عدالت عالیہ کے فاضل بنچ نے یہ احکامات گذشتہ روز معذوروں کے 2فیصد کوٹے کے حوالے سے ایک ہی نوعیت کی مختلف رٹ درخواستوں کی سماعت کے دوران جاری کئے اس موقع پر درخواست گذار وسیم اللہ شاہ کی جانب سے اعجازصابی ایڈوکیٹ پیش ہوئے اورعدالت کو بتایا کہ نیشنل کونسل آرڈیننس1983ء کے تحت سرکاری محکموں میں دو فیصد کوٹہ مختص ہے جبکہ دیگرمراعات دی جائیں گی تاہم واضح قانون ہونے کے باوجود معذروں کو ان کے حقوق ادا نہیں کئے جارہیے ہیں اس موقع پر ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل قیصرعلی شاہ ٗ وفاق سے اسسٹنٹ اٹارنی جنرل طارق منصوراورمحکمہ سوشل ویلفیئرکانمائندہ عدالت میں پیش ہواعدالت عالیہ کے دورکنی بنچ نے وفاقی اورصوبائی حکومتوں اورفاٹاسیکرٹریٹ کو ہدایات جاری کیں کہ 2مئی سے قبل جواب داخل کریں اوربتایا کہ معذورافراد کو ان محکموں میں کتناکوٹہ دیاجارہا ہے اوراس حوالے سے کونسی پالیسی پرعملدرآمد کیاجارہا ہے ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر /رائے