A PHP Error was encountered

Severity: Notice

Message: Undefined offset: 0

Filename: frontend_ver3/Sanitization.php

Line Number: 1246

Error

A PHP Error was encountered

Severity: Notice

Message: Undefined offset: 2

Filename: frontend_ver3/Sanitization.php

Line Number: 1246

آئندہ بجٹ میں قرضوں کیلیے بجٹ کا 30 فیصد ،ترقیاتی کاموں کیلیے ساڑھے 13 فیصد مختص کرنے کا فیصلہ

آئندہ بجٹ میں قرضوں کیلیے بجٹ کا 30 فیصد ،ترقیاتی کاموں کیلیے ساڑھے 13 فیصد مختص کرنے کا فیصلہ

Apr 18, 2018 | 11:21:AM

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)آئندہ سال بجٹ میں قرضوں کی ادائیگی کے لیے بجٹ کا 30 فیصد جبکہ ترقیاتی کاموں کے لیے مجموعی بجٹ کا ساڑھے 13 فیصد مختص کیا جائے گا۔

نجی چینل کے مطابق نئے مالی سال کے بجٹ کی تیاریاں زوروں پر ہیں۔ بجٹ اسٹریٹجی پیپر کی منظوری دے دی گئی ہے۔پیپر کے مطابق آئندہ بجٹ کے لیے 5 ہزار 2 سو 30 ارب روپے مجموعی اخراجات کے لیے ہوں گے۔ دفاع کے لیے 11 سو ارب، 16 سو ارب غیر ملکی قرضوں کی ادائیگی کے لیے مختص کیے جائیں گے۔

آئندہ مالی سال کے لیے ٹیکس وصولی کا ہدف 45 سو ارب روپے رکھا گیا ہے۔ غیر محصولاتی آمدن کا ہدف 1 ہزار 50 ارب روپے ہے جبکہ وفاقی ترقیاتی بجٹ کا حجم 7 سو 50 ارب روپے ہے۔آئندہ بجٹ میں زرعی ترقی کا ہدف 3.8، صنعتی ترقی کا ہدف 7.6 فیصد جبکہ خدمات کے شعبے میں ترقی کا ہدف ساڑھے 6 فیصد مقرر کیا گیا ہے۔

مہنگائی کی شرح کو 6 فیصد تک محدود رکھا جائے گا۔ مجموعی سرمایہ کاری کا حجم جی ڈی پی کا 17.2 فیصد جبکہ قومی بچت 13.3 فیصد مقرر کیا گیا ہے۔وفاقی کابینہ نے ائندہ مالی سال میں برآمدات 27 ارب 30 کروڑ ڈالر جبکہ درآمدات کا حجم 53 ارب ڈالر کرنے کی منظوری دی ہے۔آئندہ مالی سال تجارتی خسارے کا حجم 29 ارب 20 کروڑ ڈالر تک رہے گا جبکہ جاری کھاتوں کا خسارہ ساڑھے 12 ارب ڈالر یعنی جی ڈی پی کا 3.8 فیصد تک محدود رکھا جائے گا۔

این ایف سی کے تحت صوبوں کو 25 سو 65 ارب روپے دیے جائیں گے۔ سبسڈی کی مد میں 2 سو 30 ارب روپے دیے جائیں گے۔ آئندہ مالی سال بجٹ خسارے کا حجم 18 سو 70 ارب روپے ہوگا۔

مزیدخبریں