”میرا سونے کیلئے بیڈ پر آتی ہے تو میرے۔۔۔“ شاہد کپور نے ”بیڈروم“ کے اندر کی ایسی بات مداحوں کیساتھ شیئر کر دی کہ ہر کسی کے شرم سے گال لال ہو گئے، جان کر آپ بے اختیار کہیں گے ”بھلا ایسی باتیں بتانے کی کیا ضرورت ہے“

”میرا سونے کیلئے بیڈ پر آتی ہے تو میرے۔۔۔“ شاہد کپور نے ”بیڈروم“ کے اندر کی ...
”میرا سونے کیلئے بیڈ پر آتی ہے تو میرے۔۔۔“ شاہد کپور نے ”بیڈروم“ کے اندر کی ایسی بات مداحوں کیساتھ شیئر کر دی کہ ہر کسی کے شرم سے گال لال ہو گئے، جان کر آپ بے اختیار کہیں گے ”بھلا ایسی باتیں بتانے کی کیا ضرورت ہے“

  

نئی دہلی (ڈیلی پاکستان آن لائن) بالی ووڈ اداکار شاہد کپور اور ان کی اہلیہ میرا راجپوت بہترین جوڑیوں میں سے ایک مانی جاتی ہے۔ دونوں کی شادی کو 2 سال ہو چکے ہیں اور دونوں ہی ہر موقع پر ایک دوسرے کی خوب دل کھول کر تعریف کرتے ہیں جبکہ ان کی ایک بیٹی بھی ہے۔

یہ بھی پڑھیں۔۔۔”میں کنوارہ پن بیچنا چاہتی ہوں اور مجھے اب تک۔۔۔“ پرتگال کی حسینہ نے کنوارہ پن بیچنے کا اعلان کیا تو اسے کتنے لاکھ ڈالرز کی پیشکش ملی اور وہ کتنی رقم لینا چاہتی ہے؟ تفصیلات نے ہر کسی کا سر شرم سے جھکا دیا 

شاہد کپور نے حالیہ انٹرویو کے دوران اپنے گھر میں موجود الماری سے متعلق دلچسپ بات بتائی اور جب ان سے ’بیڈروم‘ سے متعلق کوئی ایک راز بتانے کیلئے کہا گیا تو انہوں نے ایسا انکشاف کیا کہ ہر کسی کے گال شرم سے لال ہو گئے جبکہ جان کر آپ بھی بے اختیار کہیں گے کہ ”بھلا ایسی باتیں بتانے کی کیا ضرورت ہے؟“

شاہد کپور نے بتایا کہ جس گھر میں وہ رہائش پذیر ہیں وہ شادی سے صرف 6 ماہ پہلے تیار ہوا اور اس میں کسی لڑکی کیلئے کوئی الماری نہیں بنائی گئی کیونکہ یہ میرے اکیلے رہنے کیلئے بنایا گیا تھا۔ الماری کے دو حصے ہیں اور دونوں بالکل ایک ہی سائز کے ہیں لہٰذا شادی کے بعد میں نے ایک سائیڈ خالی کر کے میرا کو دیدی اور کہا کہ میرے پاس صرف یہی ہے۔

شاہد کپور نے یہ بھی بتایا کہ میرا راجپوت کے پاس ان کی نسبت زیادہ جوتے موجود ہیں اور یہ الماری میں میری جگہ بھی ’کھاتے‘ جا رہے ہیں اس لئے میں اپنے پرانے ہو جانے والے جوتے پھینک دیتا ہوں۔

اس موقع پر انہوں نے ’بیڈروم‘ سے متعلق ایک ’راز‘ بتاتے ہوئے کہا کہ ”میرا راجپوت میرے کپڑے پہن کر سوتی ہے۔ “ یہ راز سامنے آنے پر شاہد کپور کے مداح تو دونوں کے پیار سے کافی متاثر نظر آ رہے ہیں مگر اکثر افراد کا کہنا ہے کہ ذاتی زندگی کے معاملات خود تک محدود رکھنے چاہئیں اور ایسی باتیں بھلا لوگوں کو بتانے کی ضرورت ہی کیا ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /تفریح