’’ایسی دماغی لکیروالے جنسی طور پر انتہائی ۔۔۔‘‘ ایسی علامت جو ہرکسی کو چونکا کر رکھ دے گی 

’’ایسی دماغی لکیروالے جنسی طور پر انتہائی ۔۔۔‘‘ ایسی علامت جو ہرکسی کو ...
’’ایسی دماغی لکیروالے جنسی طور پر انتہائی ۔۔۔‘‘ ایسی علامت جو ہرکسی کو چونکا کر رکھ دے گی 

  

لاہور (نظام الدولہ )عورتوں اور مردوں کے ہاتھوں کی لکیروں کا ان کی جنسی زندگی اور میلانات سے گہرا تعلق ہوتا ہے۔یہ قدرتی نظام کار ہے کہ قدرت نے کس کو کتنی جنسی صلاحیت عطا کررکھی ہے تاہم انسان اپنی خواہشات اور تربیت و ماحول کی وجہ سے اس صلاحیت کو استعمال کرتے ہیں ۔

جنسی اور رومانوی زندگی اور گرم جوش تعلقات کا سب سے زیادہ تعلق زہرہ کے ابھار کے ساتھ ہوتا ہے۔یہ جتنا وسیع اور ابھرا ہوگا اتنی ہی رومانوی اور جنسی زندگی میں گرم جوشی ہوگی،جسمانی طور مضبوطی و دلکشی ہوگی۔علاوہ ازیں ایسا فرد دوسروں کے ساتھ تعلقات قائم کرتے ہوئے بھی فطری گرم جوشی کا اظہار کرے گا ۔زہرہ کا ابھار انگوٹھے کے نیچے اور زندگی کی لکیر کے اندر ہوتا ہے۔زہرہ کے ابھار پر آڑھی ترچھی ٹوٹی پھوٹی لکیروں سے کسی کی بے سکون ازدواجی اور سماجی زندگی کا جائزہ لیا جاسکتا ہے۔زہرہ کا پچکا ہوا ہونا کسی کے جنسی طور پر بے اعتدال ہونے کو بھی ظاہر کرتا ہے ،اگر ساتھ ہی اسکی دماغی لکیر سے بھی چند لکیریں ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہوں تو ایسے شخص میں خود لذتی کا مرض پایا جاتا ہے۔

جن لوگوں کی جنسی زندگی پرسکون ہوتی ہے ،ان کی شادی کی لکیر دیکھ کر اس امر کا جائزہ لیا جاسکتا ہے ۔آپ نے دیکھا ہوگا کہبعض ہاتھوں میں ایک سے زائد شادی کی لکیریں ہوتی ہیں۔ان میں ایک واضح لکیر تو شادی کو ظاہر کرتی ہے ۔دوسری لکیریں اس فرد کے جنسی اطمینان کو ظاہر کرتی ہیں ۔ایسا انسان فریق ثانی سے بڑا مطمئین ہوتا ہے۔تاہم اگر شادی کی لکیریں جس ابھار پر موجود ہوں یہ بھرا ہوا تو یہ ایسا فرد رومانس اورجنسی معاملے میں کچھ زیادہ مطلبی ہوتا ہے۔تاہم اس ابھار کو دماغ کی لکیر سے بھی جانچنا ہوتا ہے ۔

یا د رکھیں ،جنسی زندگی انسان کی بنیادی ضرورت ہے اور اسکا انسانی خیالات اور دماغی کیفیات پر انحصارہوتا ہے۔دماغی طور پر صحت مند انسان رومانوی،جنسی اور سماجی زندگی میں جیسا برتاوظاہر کرتا ہے ویسا ہی اسکا دماغ ہوتا ہے اور اسکا آئینہ اسکی دماغی لکیر ہے ۔خم کھا کر نیچے جھکنے والی،آڑھی ترچھی لکیروں سے کٹ جانے والی لکیر اور اس پر اگر مختلف نشانات موجود ہوں تب بھی اسکے ازدواجی اور جنسی میلانات اور صلاحیتوں کا اظہار ہوتا ہے۔کس میں کتنا ضبط اور کس میں بے اعتدالی ہے،اسکا دارومدار دماغ کی لکیر اور زہرہ کے ابھارپر ہوتا ہے۔

جن ہاتھوں میں دماغ کی دہری لکیر ہوتی ہے ،ایسے لوگوں میں خود غرضانہ جنسی ہوس بہت زیادہ ہوتی ہے۔ اس سے بھی انسان کی جنسی ازدواجی زندگی کو دیکھا جاسکتا ہے۔اگر کسی ہاتھ میں دماغ کی لکیر زندگی کی لکیر سے پھوٹی ہو اور اس سے نیچے بھی ایک دماغی لکیر زندگی کی لکیر سے متصل ہوتو یہ ایسے فرد کی عکاسی کرتی ہیں جو پینتیس سال کی عمر تک شادی میں رومانس نہیں دیکھتا بلکہ شادی کو ایک قاعدے اور بغیر رومانس کے دیکھتا ہے۔مطلب جنس اسکی ضرورت ہے ،اس میں وہ قطعی لطف و اطمینان اور آسودگی نہیں پاتا ۔تاہم پینتیس سال بعد وہ خفیہ جنسی تعلقات قائم کرلیتا ہے ۔تاہم اس دوسری لکیر کی ساخت سے معلوم ہوگا کہ وہ خفیہ جنسی معاملات میں رومانس کا قائل ہے یا نہیں ۔ ( nizamdaola@gmail.com )

مزید : لائف سٹائل /مخفی علوم