وفاقی حکومت نے دھرنوں میں شہید اہلکاروں کے لیے شہدا پیکج کا اعلان کردیا 

وفاقی حکومت نے دھرنوں میں شہید اہلکاروں کے لیے شہدا پیکج کا اعلان کردیا 
وفاقی حکومت نے دھرنوں میں شہید اہلکاروں کے لیے شہدا پیکج کا اعلان کردیا 

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید نے کہا ہے کہ دھرنوں میں شہید ہونے والے اہلکاروں کے لیے شہیدپیکج لا رہے ہیں،دھرنوں میں چار  پولیس اہلکار شہید اور 580 زخمی ہوئے، ایک پولیس اہلکار یونیفارم میں نماز پڑھنے گیا تو لوگوں نے اسے مارنا شروع کردیا،کالعدم تحریک لبیک نے پورے ملک کو سیل کرنےکا پلان بنایا ہوا تھا، ایسا قانون لا رہے ہیں جس کے تحت کالعدم تحریک لبیک  کے ممبر اسمبلیوں میں نہیں رہ سکیں گے،قانون کے تحت نہ یہ لوگ الیکشن میں حصہ لے سکیں گے اور نہ ہی کسی دوسری پارٹی میں شامل ہوسکیں گے۔

نجی ٹی وی سےخصوصی گفتگو کرتےہوئے شیخ رشیداحمدنےکہا کہ ہر سیاستدان کی خواہش ہوتی ہے کہ اس کی بھی مشہوری ہو،تحریک لبیک پارٹی2017 میں بنی تھی،میری آج تک خادم حسین رضوی اور سعد رضوی سے ملاقات نہیں ہوئی اور نہ ہی میں کبھی بھی تحریک لبیک کے دھرنے میں گیا، تحریک لبیک کا دھرنے اور انتشار کے علاوہ کوئی منشور نہیں ہے، تحریک لبیک نے پورے ملک کو سیل کرنے کا پلان بنایا ہوا تھا، ہم نے بھر پور کوشش کی کہ مسودہ اسمبلی میں لے آئیں،تحریک لبیک والے بھرپور تیاری میں تھے، تحریک لبیک کو 30 دن کا نوٹس دیا گیا ہے، میرے بارے میں جو کچھ کہا جارہا ہے وہ غلط ہے۔

وفاقی وزیرداخلہ نے کہا کہ ناموس رسالتﷺ پر وزیراعظم عمران خان نے اقوام متحدہ میں تقریر کی،ہم عاشق رسول ﷺہیں، ایسی 100 وزارتیں ختم نبوتﷺ پر قربان کرتا ہوں، بطور وزیرداخلہ کسی پارٹی سے کوئی مسئلہ نہیں ہے، اس ملک میں وزارت داخلہ کے امتحان کے دن کم ہوتے ہیں،مجھے اپنا مذہب چھوڑنا نہیں اور کسی کے فرقے کو چھیڑنا نہیں ہے، میں تمام علمائے کرام کا احترام کرتا ہوں،اللہ اور رسولﷺ کے بعد اس ملک کے بھی وفادار ہیں۔انہوں نے کہا کہ کالعدم تحریک لبیک کے دھرنوں میں چار پولیس اہلکار شہید اور 580 زخمی ہوئے، گوجرانوالہ میں آکسیجن کے ٹرک سے اتار کر ڈاکٹرز کو مارا گیا، ایک پولیس اہلکار یونیفارم میں نماز پڑھنے گیا تو لوگوں نے اسے مارنا شروع کردیا،دھرنوں میں شہید اہلکاروں کو شہید پیکج دیا جائے گا۔

ایک سوال کے جواب میں وفاقی وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ میرا کام ہے ایف آئی اے اور امیگریشن کو پالیسی دینا،احتساب کےشعبے کو شہزاد اکبر دیکھ رہے ہیں،شہزاداکبر نہ میرے کام میں مداخلت کررہے ہیں اور نہ میں ان کے کام میں۔

مزید :

قومی -