ڈپٹی سپیکر پر پی ٹی آئی ارکان کا تشدد قابل مذمت ہے،محفوظ مشہدی

  ڈپٹی سپیکر پر پی ٹی آئی ارکان کا تشدد قابل مذمت ہے،محفوظ مشہدی

  

لاہور (نمائندہ خصوصی) جمعیت علماء پاکستان(سواد اعظم) کے مرکزی صدر پیر سید محمد محفوظ مشہدی نے پنجاب اسمبلی میں ہونے والی بدتمیزی اور ڈپٹی سپیکر دوست محمد مزاری پر پی ٹی آئی ارکان کے تشدد کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے جمہوریت،آئین پر حملہ اور ایوان کا تقدس پامال کرنے کی سازش قرار دیا ہے۔چودھری پرویز الٰہی نے مقدس ایوان کا تقدس پامال کیا ہے۔،بتایا جائے کہ لوٹے اور پرائیویٹ فورس ایوان کے اندر لے جانے کی اجازت کس نے دی؟ ڈپٹی اسپیکر پر حملہ وزیر اعلیٰ کے انتخاب کو روکنے اورایوان کی اجلاس کو سبوتاڑ کرنے کی سازش تھی۔ چوہدری پرویز الٰہی الیکشن میں مداخلت کرکے آئین پر عملدرآمدمیں رکاوٹ کا باعث بنے ہیں۔ ڈپٹی اسپیکر پر حملہ کرنے والے رکان اسمبلی کے خلاف تادیبی کاروائی کیا جائے۔انہوں نے کہا کہ آئینی انتخابی عمل میں رکاوٹ اور انتقال اقتدار میں مشکلات پیدا کر کے حکمران اتحاد نے سوائے شرمندگی کچھ حاصل نہیں کیا۔اسپیکر پنجاب اسمبلی اور امیدوار حکومتی اتحاد کو اپنی اداو ¿ں پر غور کرناچاہیے۔اسمبلی فوٹیج نے اجلاس کے دوران ہونے والے تمام حقائق بے نقاب کردیے کہ کون بیرونی عناصر کو ایوان کے اندر لے کر آیا؟ کس نے ڈپٹی سپیکر پر حملہ کروایا اور پولیس کو بیرونی بدمعاشوں نے تشدد کا نشانہ بنایا؟ پیر محفوظ مشہدی نے ڈپٹی سپیکر کے صبروتحمل ہوئے کو سراہتے ہوئے کہا کہ آئی جی پنجاب اور چیف سیکرٹری کو صورتحال سے آگاہ کرکے اپنی ذمہ داریوں سے عہدہ برا ہونے کی کوشش کی۔ان خیالات کا اظہار پیر محفوظ مشہدی نے مرکزی سیکرٹری جنرل پیر محمد اقبال شاہ، صوبائی صدر واجد علی گیلانی اور دیگر رہنماو ¿ں کے ہمراہ ایک اجلاس 

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -