اسلام آباد ہائیکورٹ نے نوازشریف کو ڈپلومیٹک پاسپورٹ جاری کرنے سے روکنے کے لئے درخواست مسترد کردی

اسلام آباد ہائیکورٹ نے نوازشریف کو ڈپلومیٹک پاسپورٹ جاری کرنے سے روکنے کے ...
اسلام آباد ہائیکورٹ نے نوازشریف کو ڈپلومیٹک پاسپورٹ جاری کرنے سے روکنے کے لئے درخواست مسترد کردی

  

اسلام آباد ( ڈیلی پاکستان آن لائن) اسلام آباد ہائیکورٹ نے نواز شریف   کو ڈپلومیٹک پاسپورٹ کا اجراء روکنے اور وطن واپسی پر گرفتار کرنے کی درخواست ناقابل سماعت قرار دیتے ہوئے  مسترد کر دی ، عدالت نے درخواست گزار پر  5 ہزار روپے جرمانہ بھی عائد کیا ۔ 

اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے شہری نعیم حیدر کی نوازشریف کو ڈپلومیٹک پاسپورٹ جاری کرنے سے روکنے کے لئے درخواست قابل سماعت ہونے پر سماعت کی ،  عدالت نے استفسار کیا کہ  بتائیں وفاقی  حکومت نے کب آرڈر کیا جس سے آپ متاثر ہوئے ہیں،  یہ کورٹ ہوا میں تو کوئی آرڈر نہیں کرے گی ، پورے میڈیا میں  اس کے چرچے ہیں ، ہم نے کوشش کی کہ وہ آرڈر ملے مگر نہیں مل سکا ،  عدالتی فیصلے میں موجود ہے کہ اشتہاری کا سرینڈر کرنا ضروری ہے ۔

عدالت نے ریمارکس دیے کہ کوئی اشتہاری ہے تو اس کے ساتھ  قانون کے مطابق کارروائی ہو گی ۔ وکیل درخواست گزار نے کہا کہ اشتہاری کو  پاسپورٹ جاری ہو تو عدالت کی عزت کا سوال ہے ۔ چیف جسٹس اطہر من اللہ نے ریمارکس دیے کہ اس عدالت کی عزت عدالتی فیصلے  ہیں ۔

عدالت نے درخواست گزار سے کہا کہ  پہلے سے ہی بہت  کیسز ہیں ، سائلین کیلئے قیمتی وقت ہے ،  عدالتی وقت ضائع کرنے پر کیوں  نہ آپ پر جرمانہ عائد کیا جائے ، عدالت نے درخواست قابل سماعت ہونے سے متعلق فیصلہ محفوظ کیا جو کچھ دیر بعد سنایا گیا، عدالت نے درخواست ناقابل سماعت قرار دیتے ہوئے مسترد کر دی ،عدالت نے  3 صفحات پر مشتمل فیصلے میں  درخواست گزار کو 15 روز میں  پانچ ہزار روپے جرمانہ جمع کرانے کا حکم دیا۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -