پنجاب اسمبلی میں ہنگامہ آرائی ، ڈپٹی سپیکر کے ذاتی عملے نے کمپیوٹر سے ہارڈ ڈرائیو نکال لی ، اسسٹنٹ ڈائریکٹر کا دعویٰ

پنجاب اسمبلی میں ہنگامہ آرائی ، ڈپٹی سپیکر کے ذاتی عملے نے کمپیوٹر سے ہارڈ ...
پنجاب اسمبلی میں ہنگامہ آرائی ، ڈپٹی سپیکر کے ذاتی عملے نے کمپیوٹر سے ہارڈ ڈرائیو نکال لی ، اسسٹنٹ ڈائریکٹر کا دعویٰ

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن ) پنجاب اسمبلی میں ہنگامہ آرائی کے ویڈیو شواہد خراب ہونے کا خدشہ ظاہر کیا جارہاہے اور آئی ٹی ڈیپارٹمنٹ کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر نے دعویٰ کیا ہے کہ دوست محمد مزاری کے ذاتی عملے نے ان کے سسٹم سے ہارڈ ڈرائیو نکال لی ہے ۔ 

انگلش جریدے ڈان نیوز کے مطابق پنجاب اسمبلی کے آئی ٹی دیپارٹمنٹ کے اسٹنٹ ڈائریکٹرنے سیکرٹری اسمبلی محمد خان بھٹی کو تحریری طور پر بتایا ہے کہ ڈپٹی سپیکر دوست محمد مزاری کے ذاتی عملے کے کچھ ارکان نے ہفتہ کو رات گئے میرے آفس کا دورہ کیا تاکہ ڈیٹا پر مشتمل پورے کمپیوٹر سسٹم کو ہٹایا جا سکے, مگر میری مزاحمت اور پورے سسٹم کو اٹھانے میں مشکلات کی وجہ سے انہوں نے صرف ہارڈ ڈرائیو نکال لی ۔

گورنر پنجاب عمر سرفراز چیمہ نے شواہد ریکارڈ ہٹائے جانے پر رپورٹ طلب کر لی اسی سلسلے میں سیکرٹری اسمبلی محمد خان بھٹی نے اتوار کو اپنے دفتر کا دورہ کیا اور گورنر کے مشاہدے کیلئے ہفتہ کے واقعہ پر ایک رپورٹ مرتب کی۔

واضح رہے کہ ڈپٹی سپیکر دوست مزاری نے سیکرٹری اسمبلی محمد خان بھٹی سمیت اسمبلی کے 4 سینئر افسران پر انتخابی عمل کے دوران ہنگامہ آرائی میں مبینہ طور پر ملوث ہونے کے الزام میں اسمبلی عمارت میں داخلے پر پابندی عائد کر دی تھی۔انگلش جریدے نے ذرائع کے حوالے سے بتایا کہ محمد خان بھٹی کی رپورٹ میں ووٹنگ سے قبل ہنگامہ آرائی کا ذمہ دار ڈپٹی سپیکر اور اپوزیشن اراکین کو ٹھہرایا گیا ہے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ڈپٹی سپیکر نے صبح کے اجلاس میں ایک گھنٹہ کی تاخیر کی اورقانون کی خلاف ورزی کرتے ہوئے پنجاب اسمبلی کی سیکیورٹی کے بجائے اسمبلی ہال میں پولیس اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکاروں کو تعینات کرنے کا اختیار دیا۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -