وزیر اعلیٰ امیر حیدرہوتی کا گلگت بلتستان کے وزیر اعلیٰ سے ٹیلی فون پر رابطہ سانحہ بابو سر پر دکھ کا اظہار

وزیر اعلیٰ امیر حیدرہوتی کا گلگت بلتستان کے وزیر اعلیٰ سے ٹیلی فون پر رابطہ ...

  

پشاور(پاکستان نیوز)خیبرپختونخواکے وزیر اعلیٰ امیر حیدر خان ہوتی نے گزشتہ رات گلگت بلتستان کے وزیراعلیٰ سید مہدی شاہ سے ٹیلی فون پررابطہ کیا اور ان سے سانحہ با بو سرپر انتہائی افسوس اور ہمدردی کا اظہار کیا۔ انہوں نے اس واقعہ کی شدید مذمت کی اور اسے غیر انسانی فعل قرار دیا۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ ملک دشمن دہشت گرد فرقہ واریت کو ہوا دے کر ملک میں بدامنی اور انتشار پھیلانا چاہتے ہیں۔انہوںنے کہاکہ مشترکہ کوششوں سے ملک کے دشمنوںکے عزائم ناکام بنادیئے جائیں گے ۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ ملک میں مکمل مذہبی بھائی چارہ اور فرقہ وارانہ ہم آہنگی ہے۔ انہوں نے متاثرہ خاندانوں کے ساتھ صوبائی حکومت اور خیبر پختونخوا کے عوام کی طرف سے مکمل یکجہتی اور ہمدردی کا اظہار کیا۔ گلگت اور بلتستان کے وزیراعلیٰ سید مہدی شاہ نے خیبر پختونخوا کے عوام اور حکومت کا شکریہ ادا کیا۔ انہوںنے کہاکہ معصوم شہریوںکواپنی وحشت اوردرندگی کانشانہ بنانے والے مسلمان اورانسان کہلانے کے مستحق نہیں ہیں۔وزیراعلیٰ نے متاثرہ خاندانوںکے ساتھ مکمل ہمدردی اوریکجہتی کااظہارکرتے ہوئے شہداءکے درجات کی بلندی اورلواحقین کیلئے صبرواستقامت کی دعاکی۔خیبرپختونخواکے وزیر اعلیٰ امیر حیدر خان ہوتی نے کہا ہے کہ گزشتہ ساڑھے چار سال کے دوران دہشت گردی، سیلاب اور دیگر چیلنجوں کے باجود صوبے میں اجتماعی خدمت اور ترقی کے سفر کو رکنے نہیں دیا گیا۔ مردان کی 60سالہ ترقیاتی محرومیوں کی تلافی کےلئے کوششیں کی گئی ہیں۔انہوں نے ان خیالات کا اظہار جمعہ کے روز وزیراعلیٰ ہاﺅس میں اپنے حلقہ نیابت KP-23کے وفد سے خطاب کرتے ہوئے کہی جس میں عمائدین علاقہ کے ساتھ ساتھ علماءکرام کی کثیر تعداد بھی شامل تھی۔ اس موقع پر اے این پی کے صوبائی نائب صدر انجینئر عباس، PK-23کے صدر حاجی شاہنواز اور جنرل سیکرٹری لطیف الرحمان بھی موجود تھے۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ اجتماعی خدمت اور محرومیوں کی تلافی کا یہ سلسلہ اسی جذبے کے ساتھ جاری رکھیں گے۔ انہوںنے کہا کہ اس وقت مردان میں عبدالولی خان یونیورسٹی، باچا خان میڈیکل کالج ، ہسپتال، ایسٹرن اور ویسٹرن بائی پاسز مکمل ہو چکے ہیں۔ انہوں نے اپنے اس عزم کا اعادہ کیا کہ وہ کار خیر کی سرگرمیوں اور اجتماعی بھلائی کے کاموں کو منطقی انجام تک پہنچائیں گے۔ انہوں نے بے روزگاری، ناخواندگی، غربت کے خاتمے کےلئے موجودہ حکومت کے خصوصی اقدامات پر بھی تفصیلی روشنی ڈالی اور کہا کہ خصوصی اقدامات پر عملدرآمد میں تسلسل ناگزیر ہے۔انہوںنے کہاکہ عوام میں ان خصوصی اقدامات کونمایاںپذیرائی حاصل ہوئی ہے۔انہوںنے حکومت کی کامیابیوںمیں عوام کی تائیداورمکمل حمایت کواہم قراردیا۔

مزید :

صفحہ اول -