سانحہ بابو سر‘ شناخت کے بعد مسافروں کے ہاتھ آزار بند کے ساتھ باندھے گئے

سانحہ بابو سر‘ شناخت کے بعد مسافروں کے ہاتھ آزار بند کے ساتھ باندھے گئے

  

مانسہرہ (بیورو رپورٹ) بابوسر ٹاپ ناراں 19 افراد کے قتل کا تھانہ کاغان پولیس نے 35 افراد کے خلاف انسداد دہشتگردی ایکٹ کے تحت مقدمہ درج کرلیا تھانہ کاغان میں زیر دفعات 6/7ATA/3002/42 7/148-149 کے تحت درج ایف آئی آر میں کہا گیا ہے کہ پولیس بابو سر ٹاپ 19 افراد کے قتل کی اطلاع پر موقع پر پہنچی تو معلوم ہوا کہ نامعلوم 30/35 افراد نے ویران جگہ پر پنڈی سے گلگت جانے والی پانچ گاڑیوں کوسٹر نمبر جی ایل ٹی اے 1560 ٹیوٹا ہائی ایس نمبر ایل ڈبلیو ایس 3858 محفوظ کوچز نمبر جی ایل ٹی اے 1577۔ RIR9376 اور شاہ زور گاڑی نمبر 1783 کو روک کر مسافروں کو شناخت کرکے نیچے اتار کر ازار بند سے ہاتھ باندھ کر 19 مسافروں جلال حسین ولد خادم حسین سکنہ استور ‘ نیاد علی ذوالفقار علی جگلوٹ غفار علی ولد خادم حسین استور‘ طاہر محمود ولد عبدالقادر بھٹیاں پنڈی مشرف عالم ولد علی محمد سکنہ چلاس‘ اشتیاق حسین ولد دولت علی سکنہ گلگت غلام نبی ولد غلام حیدر گلگت محمد حسین ولد نجف علی گلگت ساجد ولد بشر استور‘ حمید اللہ ولد شیر علی سکردو‘ صلاح الدین ولد علی گوہر گلگت طارق ولد نامعلوم اور دیگر کو آتشین اسلحہ سے فائرنگ کرکے قتل کیا ہے ملزمان نے کمانڈوز وردیاں پہن رکھی تھیں تھانہ کاغان پولیس نے 30/35 افراد کے خلاف مقدمہ درج کرکے تفتیش شروع کرد ہے جبکہ واقع میں قتل ہونے والے تمام افراد کی نعشیں پوسٹمارٹم کے بعد آبائی علاقوں کو روانہ کردی گئی ہیں درج ایف آئی آر میں کہا گیا ہے کہ نامعلوم افراد نے 19 افراد کو قتل کرنے کے بعد گاڑیوں کو بھی نقصان پہنچایا ہے۔

مزید :

صفحہ اول -