صحت مند زندگی کیلئے کھلی آب وہوا، متوازن غذاءناگزیر ہے، حکیم سید عمران

صحت مند زندگی کیلئے کھلی آب وہوا، متوازن غذاءناگزیر ہے، حکیم سید عمران

  

لاہور(پ ر) تندرستی ہزار نعمت ہے اس لئے تندرستی کے لئے کھلی آب و ہوا اور صحیح غذا کا استعمال بہت ضروری ہے بقراط کا قول ہے ”بیماری کا علاج سب سے پہلے غذاﺅں کے ذریعے کرنا چاہیے اگر اس سے فائدہ نہ ہو تو پھر نباتاتی اور حیواناتی آخر میں معدنی ادویہ سے مدد لینی چاہیے یہ بات اظہرمن الشمس ہے کہ مختلف امراض سے بچنے اور تندرست رہنے کے لئے علمی اصول اور صحت کے بارے میں معلومات جاننا اشد ضروری ہے ۔ ان خیالات کااظہار ادارہ تحقیقات طیبہ رجسٹرڈ پاکستان کے زیر اہتمام منعقدہ مجلس مذاکرہ ” صحت غذا اور ہماری ذمہ داریاں“ کے موضوع پر خطاب کرتے ہوئے پروفیسر حکیم سید عمران فیاض، حکیم محمد افضل میو، حکیم سید عارف رحیم، حکیم غلام فرید میر، حکیم حافظ محمد ارشد، حکیم وسیم اشرف، حکیم مبارز رحیم، حکیم محمد اکرم مغل، حکیم عبدالرزاق، حکیم فیصل طاہر صدیقی، حکیم مشتاق احمد قادری، حکیم محمد شاہد لطیف، طبیبہ فرح چودھری نے کیا انہوں نے کاہ کہ غذا کے ساتھ روشنی، نیند، ورزش، پرہیز ہمارے جسم کی مناسب پرورش، نشوونما، اصلاح اور بدن کی صحت کو برقرار رکھنے میں معاون ثابت ہوتی ہے ہمارے بدن کی اصلاح میں وٹامنز کا کردار نمایاں حیثیت کا حامل ہے ہم جو معدنیات روز مرہ زندگی میں استعمال کرتے ہیں ان میں کیلشم ، فاسفورس، کلورین، لوہا، سوڈیم، پوٹاشیم، میگنیشیم اور گندھک وغیرہ شامل ہیں انہوں نے کہا کہ ہماری غذا کے اندران اجزاءکا ہونا بہت ضروری ہے پانی، لحمیات، چکنائی، نمکیات، حیاتین اور نشاستہ دار غذائیں انہوں نے مزید کہا کہ اگر ہم سنت نبوی پر عمل پیرا ہوں اور حفظان صحت کے اصولوں کے مطابق اپنی غذا کو استعمال کریں تو ہم بہت سی متعددی وبائی امراض سے بچ سکتے ہیں۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -