سیوریج لائن میں زہر یلی گیس سے 2سگے بھائی ہلاک

سیوریج لائن میں زہر یلی گیس سے 2سگے بھائی ہلاک

  

لاہور (جنرل رپورٹر) واسا کی بدانتظامی اور مجرمانہ غفلت کے باعث اٹاری سروبہ میں 50 فٹ سے زائد گہری سیوریج لائن میں کام کے دوران دو سگے بھائی سیور مین دانش اور ہیرا جاں بحق ہو گئے جبکہ تیسرے بھائی امانت کو بچا لیا گیا ایم ڈی واسا نے واسا کی غفلت تسلیم کرتے ہوئے کوٹ لکھپت واسا کے دو ایس ڈی اوز عرفان عباس اور امجد علی کو فوری طورپر غفلت کا مرتکب قرار دیتے ہوئے انہیں معطل کردیا ہے۔ جبکہ واسا کے ڈائریکٹر نشتر ٹاﺅن افتخار ملہی کو دو سیورمینوں کی ہلاکت پر شوکاز نوٹس جاری کیا ہے تفصیلات کے مطابق زیر زمین سیوریج لائنوں میں کام کرنے والے واسا کے دو سگے سیورمین بھائیوں کو ایک مرتبہ پھر واسا کے ناقص انتظامات نگل گئے ہیں کئی کئی فٹ گہری سیوریج میں لائنوں کی صفائی کے لئے مذکورہ دو سگے بھائیوں کی موت کوئی نئی بات نہیں یہ مہینے میں دو سے چار ایسے حادثات معمول بن گئے ہیں۔ ایسے واقعات میں تمام اموات واسا کی طرف سے مین سیوریج لائنوں کی صفائی کے دوران سیفٹی آلات نہ دینے سے ہورہے ہیں جمعہ کی صبح کوٹ لکھپت صنعتی علاقے واسا سب ڈویژن کے دو سیورمین دانش مسیح اور ہیرا مسیح اور امانت مسیح جو آپس میں سگے بھائی ہیں کو ان کے افسران نے اٹاری کے علاقے میں 50 فٹ سے زائد مین سیور لائن میں بغیر حفاظتی آلات دیئے اتار دیا انہیں ماسک دیئے گئے نہ سیفٹی بیلٹس اور نہ ہی انٹی گیس آلات دیئے بتایا گیا ہے کہ ایک ساتھ تینوں سیورمینوں کو گٹروں میں اتار دیا گیا اندر سے گیس کی و جہ سے دو بھائیوں دانش اور ہیرا کے دم گھٹنے سے اندر ہی ان کی موت واقع ہو گئی جبکہ تیسرے بھائی امانت مسیح کو ریسکیو ٹیموں نے بچا لیا جبکہ دانش اور ہیرا پائپ لائن کے اندر ہی دم توڑ گئے۔ ہیرا شادی شدہ تھا جبکہ دانش کی شادی آئندہ ماہ طے تھی دونوں بھائیوں کی لاشیں گھر پہنچی تو کہرام برپا ہو گیا ہیرا کی بیوی دانش کی بہنیں اور بچے لاشوں سے لپٹ کر روتے رہے اس دوران مرنے والوں کے عزیز اوقارب نے دانش اور ہیرا کی موت کو قتل قرار دیا اور کہا کہ ان کے قتل کے ذمہ داروں کے ایم ڈی اور دیگر افسران ہیں جنہوں نے خطرناک کام کے لئے بغیر حفاظتی انتظامات کے انہیں کئی فٹ گہری لائنوں کی صفائی کے لئے نیچے اتار دیا دریں اثناءواقع کی اطلاع ملنے پر ایم ڈی واسا میاں عبداللہ مرنے والوں کے گھر پہنچ گئے انہوں نے مرنے والوں کی دو لاکھ فی کس کے حساب سے نقد مالی امداد کا اعلان کیا۔ اور40 ہزار کفن دفن کے بندوبست کے لئے فوری ادائیگی کردی دوسری طرف ایم ڈی نے واسا کی غفلت اور لاپرواہی تسلیم کرتے ہوئے واسا کے متعلقہ ڈویژن کے دو ایس ڈی اوز عرفان عباس اور امجد علی کو فوری طور پر معطل کردیا ہے جبکہ ڈائریکٹر واسا نشتر ٹاﺅن افتخار ملہی کو شوکاز نوٹس جاری کردیا ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -