ایگزیکٹو پاورز شیئر نہیں کرونگا، وفاق سے کوئی معاہدہ نہیں ہوا کمیٹی بنی نہیں صرف بات ہوئی: مراد علی شاہ، کراچی کی ترقی کیلئے کڑوا گھونٹ پیا: خرم شیر زمان 

      ایگزیکٹو پاورز شیئر نہیں کرونگا، وفاق سے کوئی معاہدہ نہیں ہوا کمیٹی ...

  

 کراچی  (سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک،) وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے کہا ہے کہ سندھ حکومت اور اسمبلی کی ایگزیکٹو پاور کسی کے ساتھ شیئر نہیں ہوسکتی، اختیارات کے ساتھ کسی کو چھیڑ چھاڑ نہیں کرنے دیں گے، وفاق سے کوئی معاہدہ نہیں ہوا، کمیٹی بنی نہیں صرف بات  ہوئی ہے، سیاسی جماعتوں کی کمیٹیاں سیاسی کاموں کیلئے بنتی ہیں۔وزیراعلی سندھ مراد علی شاہ نے  پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا وفاق میں کچھ لوگ غیر سنجیدہ ہیں، سوچ سمجھ کر بات نہیں کرتے، اب وفاق خود ہم سے بات کرنے کو تیار ہے، این ڈی ایم اے وفاق کی اجازت کے بغیر کوئی کام نہیں کرسکتا، سندھ حکومت کا مؤقف ہے، آئین کے مطابق کام کریں گے، تنقید کی جاتی ہے کہ پیپلزپارٹی کی سندھ حکومت نے کچھ نہیں کیا، مانتا ہوں کچھ کام نہیں ہوسکا، کیا کروں وفاق سے پیسے نہیں ملتے، 2 سال سے وفاق نے 245 ارب روپے نہیں دیئے۔مراد علی شاہ کا کہنا تھا کراچی میں برسات پہلی بار نہیں ہوئی، بارشوں سے متعلق پرانی تصاویر سوشل میڈیا پر شیئر کی گئیں، نالوں کی صفائی کا کام بہت پیچیدہ ہے، کوڑا کرکٹ ٹھکانے لگانا اہم مسئلہ ہے، مسائل کی اہم وجہ نالوں کے اطراف تجاوزات ہیں، مسائل کے حل کیلئے سب کے تعاون کا خیرمقدم کرتے ہیں۔

مرادعلی شاہ

 کراچی (این این آئی) تحریک انصاف کراچی کے صدر و رکن سندھ اسمبلی خرم شیر زمان نے کہا ہے کہ کراچی کی ترقی اور بہتری کے لئے ہم نے پیپلز پارٹی سے ہاتھ ملا کر کڑوا گھونٹ پیا ہے تاکہ کراچی کے عوام کو کچھ ریلیف مل جائے 12سال سے صوبہ سندھ اور خصوصاً کراچی کے ساتھ پیپلز پارٹی سوتیلی ماں جیسا سلوک کررہی ہے۔ ہماری سوچ ہے کہ جمہوری طریقے سے عوام کے مسائل حل ہوں اگر آج کراچی شہر کا سروے کروائیں تو شہر کے لوگ فوری طور پر انتظامی تبدیلی کے خواہاں ہیں ہماری پارٹی کی سینئر قیادت نے یہ فیصلہ کیا ہے کہ کراچی کے بہتر مستقبل کے لئے ساتھ بیٹھا جائے کیونکہ پیپلز پارٹی کے پاس ایسے لوگ یا وہ ویژن یا مشن نہیں جس کے ذریعے صوبے کے حالات کو بہتر کیا جا سکے۔ ان خیالات کا اظہار خرم شیر زمان نے انصاف ہاؤس میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر ان کے ہمراہ اراکین سندھ اسمبلی ڈاکٹر عمران علی شاہ، ارسلان تاج، ڈاکٹر سیما ضیاء، پی ٹی آئی رہنما فراز لاکھانی، عمران صدیقی اور دیگر موجود تھے۔ خرم شیر زمان نے مزید کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ جب یہ کمیٹی کا م شروع کرے تو سب سے پہلے کراچی کے شہریوں کو پینے کا صاف پانی مہیا کیا جائے، ہم شہر کے اندر ٹینکر مافیا کے راج کا خاتمہ چاہتے ہیں۔ ہم چاہتے ہیں کہ کراچی میں صفائی ستھرائی کا نظام بین الاقوامی سطح کا ہونا چاہئے، ہم سندھ سالڈ ویسٹ مینجمنٹ بورڈ سے کرپشن کا خاتمہ چاہتے ہیں۔ پاکستان تحریک انصاف کا مطالبہ ہے کہ کراچی میں بہترین ٹرانسپورٹ کا نظام ہونا چاہئے۔۔ اس وقت کراچی شہر کو 6سے 7ہزار بسوں کی ضرورت ہے۔اورنج لائن، یلو لائن، ریڈ لائن تمام سندھ حکومت کے کاکوئی ایک منصوبہ اب تک مکمل نہیں ہو سکا ہم چاہتے ہیں کہ کراچی سیف سٹی پراجیکٹ کو فوری مکمل کیا جائے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کو فوری طور پر ٹھیک کیا جائے  ہم چاہتے ہیں کہ جو پی ٹی آئی نے آنے والے بلدیاتی انتخابات کے لئے بل جمع کروایا ہے اسے منظور کیا جائے۔ 

خرم شیر زمان 

مزید :

صفحہ اول -