محرم الحرام کے دوران علماء کرام بھائی چارے کے فروغ میں کردار ادا کریں،کمشنر ہزارہ

محرم الحرام کے دوران علماء کرام بھائی چارے کے فروغ میں کردار ادا کریں،کمشنر ...

  

پشاور(سٹاف رپورٹر)کمشنر ہزارہ ڈویژن ریاض خان محسود نے تمام مکاتب فکر سے تعلق رکھنے والے علماء کرام پر زور دیا ہے کہ وہ محرم الحرام کے دوران ڈویژن بھر میں امن و ہم آہنگی اور اخوت و بھائی چارے کی روایتی فضا برقرار رکھنے کے لئے اپنا مسلمہ کردار ادا کریں جس کے لیے انتظامیہ اور پولیس بھی حسب سابق ان کے ساتھ مکمل تعاون کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ محرم کے جلوسوں اور مجالس میں کورونا وائرس سے بچاؤ کے لیے حکومت کی وضع کر احتیاطی تدابیر(ایس او پی ز) پر سختی سے عملدرآمد یقینی بنایا جائے اور یہ ذمہ داری ضلعی انتظامیہ و پولیس کے علاوہ جلوسوں اور مجالس کے منتظمین پر بھی عائد ہو گی۔ کمشنر ہزارہ نے اس امر کو خوش آئند قرار دیا کہ امن و یکجہتی قائم رکھنے اور فرقہ وارانہ منافرت اور شرانگیزی کو روکنے کے لیے انتظامیہ،پولیس اور علماء کرام کی طرف سے کئے گئے اقدامات پر عملدرآمد کے حوالے سے اس سال بھی اہل سنت اور اہل تشیع کے علماء اکرام کے درمیان مکمل عزم و اتفاق پایا جاتا ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پیر کے روز کمشنر ہاؤس میں محرم الحرام کے حوالے سے ہزارہ ڈویژن کے تمام اضلاع سے تعلق رکھنے والے علماء، ڈپٹی کمشنروں، پولیس،امن کمیٹی، تاجرتنظیموں، وکلا اور صحافیوں کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ ریجنل پولیس آفیسر قاضی جمیل الرحمن بھی اس موقع پر موجود تھے۔کمشنر ہزارہ ریاض خان محسود نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں کورونا وائرس کے پھیلاؤ میں کمی ضرور ہوئی ہے لیکن یہ و باء ابھی ختم نہیں ہوئی اس لیے محرم الحرام کے پروگراموں میں عز اداروں کے اجتماع کے باعث کورونا سے بچاؤ کیلئے ایس او پی ز پر سختی سے عمل درآمد د کی ضرورت ہے۔انہوں نے ایس او پی ز کی پابندی کے لیے تمام اضلاع کی انتظامیہ کو ہدایات جاری کرتے ہوئے کہا کہ انتظامیہ، علماء کرام، منتظمین اور تاجر اس سلسلے میں ایک دوسرے سے تعاون کو یقینی بنائیں۔ محرم میں امن وامان کے حوالے سے ریاض خان محسود نے کہا کہ محرم الحرام کے تمام پروگرام صرف طے شدہ اور متفق طریقہ کار کے تحت ہی منعقد کئے جائیں اور شرپسند عناصر پر کڑی نظر رکھتے ہوئے انہیں اپنی پرامن صفوں میں گھسنے نہ دیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ علمائے اکرام کو اس سلسلے میں اپنا کردار ادا کرنا ہوگا کیونکہ عوام کے نزدیک علماء کی حیثیت مدبر اور قابل احترام تصور کی جاتی ہے۔ اس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے ریجنل پولیس آفیسر قاضی جمیل الرحمان نے بتایا کہ محرم کے دوران امن و امان اور رواداری وہم آہنگی برقرار رکھنے کے لئے پولیس نے تمام ضروری اقدامات کو حتمی شکل دے دی ہے جبکہ اس سلسلے میں تشکیل دی گئی تمام کمیٹیوں نے بھی اپنا ہوم ورک مکمل کرلیا ہے تاہم انہوں نے کہا کہ پولیس کے انتظامات علمائے ا کرام، تاجروں، وکلا ء اور صحافیوں کے تعاون کے بغیر نامکمل رہیں گے۔ انہوں نے خصوصی طور پرعلماء کرام پر زور دیتے ہوئے کہا کہ مذہبی رہنماؤں کی بات چونکہ ہمارے معاشرے میں خاص اثر رکھتی ہے اس لیے علمائے اکرام عوام کو امن کی خاطر ایک دوسرے کو برداشت کرنے کا درس دیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں محرم کو باہمی احترام، امن اور بھائی چارے کے ساتھ گزارنا ہے۔اس لئے تمام مکاتب فکر کے علماء آپس میں بھی ایک دوسرے سے تعاون کریں۔ انہوں نے کہا کہ سوشل میڈیا پر بھی محرم کے حوالے سے ذمہ داری کا ثبوت دینے کی ضرورت ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -