صدر ہائیکورٹ بار ملتان کیخلاف توہین عدالت کا نوٹس واپس 

    صدر ہائیکورٹ بار ملتان کیخلاف توہین عدالت کا نوٹس واپس 

  

 ملتان (خصو صی رپورٹر)   چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ جسٹس محمد قاسم خان نے صدر ہائیکورٹ بار کے خلاف توہین عدالت نوٹس کیس کی سماعت کرتے ہوئے نوٹس واپس لے لیا ہے۔ قبل ازیں رجسٹرار آفس ہائیکورٹ ملتان بنچ نے صدر ہائیکورٹ بار ایسوسی ایشن ملتان چوہدری طاہر محمود کو توہین عدالت کا نوٹس جاری کرتے ہوئے 7 روز میں جواب طلب کیا تھا۔ آئینی درخواست کی سماعت کے دوران صدر بار کو بے جا مداخلت کرنے اور سماعت کو روکنے کی کوشش کرنے کے الزام میں نوٹس دیا گیا تھا۔ صدر بار نے کہا کہ توہین عدالت کا نوٹس واپس لینے پر عدلیہ کے شکر(بقیہ نمبر47صفحہ7پر)

 گزار ہیں، واقعے کے روز چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ کو معاملہ کا علم ہوا جنہوں نے بردباری کے ساتھ معاملہ حل کرنے کی یقین دہانی کرائی چونکہ ایسے معاملے سے وکلاء  ہڑتال بھی ہوسکتی تھی۔فاضل چیف جسٹس نے کہا کہ وکلاء ہڑتال سے نہ صرف وکلاء بلکہ عوام کا بھی شدید نقصان ہونے کا اندیشہ تھا۔صدر بار نے کہا کہ بہترین عدالتی نظام پر پہلے بھی یقین تھا اور سماعت کے موقع پر خود کو عدالت کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا۔ وہ چیف جسٹس کے شکر گزار ہیں جنہوں نے معاملات کو الجھنے سے بچایا۔واقعہ محض غلط فہمی کی بنیاد پر پیش آیا تھا۔ وہ بار و بنچ کے مابین بہترین تعلقات قائم رکھنے پر یقین رکھتے ہیں۔ جنرل سیکرٹری بار سجاد حیدر سپرا نے کہا کہ بار اور بینچ کے درمیان ہمیشہ تعلق مضبوط رہیگا،بار اور بینچ ملکر انصاف کی فراہمی کیلئے کوششیں جاری رکھیں گے۔ تاکہ عوام کو ریلیف میسر ہو۔جبکہ چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ مسٹر جسٹس محمد قاسم خان نے ہائیکورٹ بار ایسوسی ایشن ملتان کے صدر چوہدری طاہر محمود اور جنرل سیکرٹری سجاد حیدر سپرا کی قیادت میں ایگزیکٹو کمیٹی سے ملاقات کے موقع پر بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ وکلاء اور بارز کو درپیش مسائل سے آگاہ ہیں اور انہیں ترجیحی بنیادوں پر حل کر رہے ہیں ہائیکورٹ بار ملتان اور ڈسٹرکٹ کورٹ ملتان میں آئندہ دو روز میں کام شروع ہو جائے گا۔صدر بار چوہدری طاہر محمود اور جنرل سیکرٹری سجاد حیدر سپرا نے کہا کہ ہائیکورٹ و ڈسٹرکٹ بار میں پارکنگ پلازہ کی تعمیر،ضلع کچہری میں عدالتوں کے لئے سہ منزلہ بلڈنگ،6کنال اراضی کے حصول اور توہین عدالت کے دئیے گئے نوٹس کی واپسی کے احکامات پر ہم چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ مسٹر جسٹس محمد قاسم خان کے بے حد مشکور ہیں اور آئیندہ بھی شفقت کی توقع رکھتے ہیں اان کے اقدامات سے بار و بنچ میں خوشگوارتعلقات کو مذید تقویت ملے گی اس موقع پر ملاقات میں رجسٹرار لاہور ہائیکورٹ  بہادر علی خان،ڈپٹی رجسٹرار لاہورمشتاق اوجلہ،ڈپٹی اٹارنی جنرل مہر ضمیر سنڈھل، سابق وائس چئیرمین پاکستان بار کونسل مرزا عزیز اکبر بیگ،ممبر پنجاب بار کونسل داؤد وینس،اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل وسیم ممتاز،نائب صدرطاہر علی قریشی،لائبریری سیکرٹری فرزانہ کوثر،فنانس سیکرٹری احسان گل،ممبران ایگزیکٹو دلدار برولہ،افضل شاہد، فخر رضا ملانہ،اشرف سدھو،اسلم راؤ،رانا شکیل و دیگر شریک تھے۔   چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ جسٹس محمد قاسم خان  نے ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج ملتان رانا زاہد اقبال خاں کو ایک کروڑ 54لاکھ 18ہزار مالیت کا ڈرافٹ دے دیا ہے۔ اس رقم سے سائلین اور وکلاء کیلئے ملتان شجاعباد اور جلالپور کی عدالتوں کے باہر پینے کیلئے واٹر کولرز لگائے جائینگے اور واش روم  تعمیر ہونگے۔چیف جسٹس نے کہا کہ سائلین اور وکلاء کو سہولیات دینا مشن ہے۔اس موقع پر سینئر جج لاہورہائیکورٹ ملتان بنچ جسٹس سردار محمدسرفراز  ڈوگر، رجسٹرار بہادرعلی خان رجسٹرار جوڈیشری مشتاق احمد اوجلہ صدر و جنرل سیکرٹری بار سمیت دیگر موجودتھے۔چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ جسٹس محمد قاسم خان دورہ جنوبی پنجاب کے تیسرے روز ملتان بنچ پہنچے تھے۔ گزشتہ روز ملتان بنچ آمد پر رجسٹرار لاہور ہائیکورٹ بہادر علی خان،ڈائریکٹر جنرل ڈسٹرکٹ جوڈیشری مشتاق احمد اوجلہ،ایڈیشنل رجسٹرار محمد یار ولانہ، ایڈیشنل رجسٹرار جوڈیشل محمد شاہد حسین، ڈپٹی رجسٹرار جوڈیشل محمد نسیم شاہد،پروٹوکول آفیسر جاوید سعید، ڈپٹی رجسٹرار معصوم عثمانی،کئیرٹیکر غلام رسول،پی اے ٹو چیف جسٹس ملک افتخار اور پرائیویٹ سیکرٹری ٹو چیف جسٹس گلزار احمد نے چیف جسٹس کا استقبال کیا۔ چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ جسٹس محمد قاسم خان نے عدالتی سماعت میں صدر بار توہین عدالت نوٹس سمیت مختلف کیسوں کی سماعت کی اور توہین عدالت کا نوٹس واپس لے کیا جبکہ دیگر کیسز پر نوٹس جاری کردیے ہیں۔ فاضل چیف جسٹس نے اپنے دورہ کا تیسرا روز مصروفیت میں گزار اور بار وفود سے ملاقاتیں کیں۔

نوٹس واپس

مزید :

ملتان صفحہ آخر -