فلورملز کو آبادی کی بنیاد پر گندم کا کوٹہ دیا جائے، صنعت کاروں کا اکٹھ

   فلورملز کو آبادی کی بنیاد پر گندم کا کوٹہ دیا جائے، صنعت کاروں کا اکٹھ

  

  ملتان (نیوز رپورٹر) کاروباری صنعتی وتجارتی برادری کودرپیش مسائل کے حل کے لئے حکام بالا تک آوازپہنچانے کے لئے ضروری ہے کہ جنوبی پنجاب کی تمام ایسوسی ایشنزاکٹھی ہوجائیں۔ فلورملز کو گندم کوٹہ آبادی کی بنیاد پردیاجائے۔جنوبی پنجاب کوگندم کاجوکوٹہ دیاجارہاہے اس سے روزانہ صرف ایک گھنٹہ فلورملزچل سکتی ہیں اس سے یہ صنعت تباہی کی طرف جارہی ہے(بقیہ نمبر37صفحہ6پر)

۔ان باتوں کا اظہار ایوان تجارت وصنعت ملتان کی میزبانی میں منعقدہونے والے فلورملزایسوسی ایشن پنجاب اورجنوبی پنجاب کے چیمبرزآف کامرس اینڈانڈسٹری (آریکا)کے ہنگامی اجلاس میں کیا گیا۔اجلاس میں کاروباری طبقے کو نیب اوراینٹی کرپشن کے ذریعے ہراساں کرنے کاسلسلہ بند کرنے کی بھی اپیل کرتے ہوئے سٹیک ہولڈرزکے ساتھ مشاورت کامطالبہ کیاگیا۔ ہنگامی اجلاس میں فلورزملزایسوسی ایشن پنجاب کے مختلف اضلاع کے صدوروعہدیداران کے علاوہ چوہدری شفیق علیم صدر رحیم یارخان چیمبرآف کامرس، جاویداقبال چوہدری صدر بہاولپورچیمبرآف کامرس اینڈانڈسٹری،ضیائالرحمن صدر خانیوال چیمبرآف کامرس اینڈانڈسٹری،محمد غضنفرصدروہاڑی چیمبرآف کامرس اینڈانڈسٹری،سید محمد احسن شاہ چیئرمین آل پاکستان بیڈشیٹ اینڈاپ ہولسٹری ایسوسی ایشن،چوہدری محمد جمیل وائس پریزیڈنٹ پاکستان فلور ملز ایسوسی ایشن،محمود خان درانی ضلعی صدر رحیم یار خان فلور ملز ایسویسی ایشن،عثمان محمودممبر ایگزیکٹو فلور ملز،چوہدری عبدالجبار بہاولپور فلور ملز ایسوسی ایشن،حبیب الرحمن لغاری ڈیرہ غازی خان فلور ملز ایسوسی ایشن،عثمان مقبول پنجاب فلور ملز ایسوسی ایشن کے علاوہ وومن چیمبرآف کامرس اینڈ انڈسٹری،آل پاکستان آئل ملز ایسوسی ایشن،پاکستان کاٹن جنرزایسوسی ایشن ودیگرصنعتی وکاروباری تنظیموں کے نمائندے بڑی تعداد میں شریک تھے۔اس موقع پرخطاب کرتے ہوئے ایوان تجارت وصنعت ملتان کے صدر شیخ فصل الہی،سینئر ایگزیکٹوممبراورکنوینئر ساؤتھ پنجاب چیمبرزخواجہ محمد یوسف نے کہاکہ کاروباری صنعتی وتجارتی برادری کودرپیش مسائل کے حل کے لئے حکام بالا تک آوازپہنچانے کے لئے ضروری ہے کہ جنوبی پنجاب کی تمام ایسوسی ایشنزاکٹھی ہوجائیں اس کے لئے ایوان تجارت وصنعت ملتان کاپلیٹ فارم حاضرہے۔ہماری تجویز ہے کہ ہرتین ماہ کے بعد ایساہی اجلاس ملتان چیمبرمیں منعقدکیاجائے۔اس موقع پردیگرمقررین نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ گند م اورآٹے کامسئلہ بہت اہم ہے یہ عوام کے ساتھ کاروبار کرنے والوں کے لئے بھی دردسربناہواہے،گندم اورآٹا بحران اصل میں ناقص پالیسی اورسٹیک ہولڈرز سے مشاورت نہ کرنے کی وجہ سے ہے۔حکومت پنجاب نے 41لاکھ میٹرک ٹن گندم خریداری میں سے 64فیصدخریداری جنوبی پنجاب سے کی ہے لیکن جب گند کوٹہ فلورملزکودینے کی باری آتی ہے توجنوبی پنجاب کی ملزکو12بوری فی باڈی جبکہ سنٹرل اوراپرپنجاب کی فلورملزکو 40سے 60بوری فی باڈی دی جارہی ہے۔انہوں نے کہاکہ اعلیٰ حکومتی عہدیداران اورافسران ہمارے ساتھ بیٹھ کر اچھی باتیں کرتے ہیں لیکن اجلاس کے بعدپھرہمارے ساتھ زیادتی کے فیصلے کرتے ہیں،اسی طرح کے رویئے کی وجہ سے کپاس کی پیداوارمیں بھی بڑی کمی ہوچکی ہے،صحیح فیصلے اورصحیح میکنزم نہ ہونے کی وجہ سے مسائل بڑھ رہے ہیں،ہمارامطالبہ ہے کہ فلورملز کو گندم کوٹہ آبادی کی بنیاد پردیاجائے۔انہوں نے کہاکہ فلورملز والوں کو ہرچینل پرذخیرہ اندوز اوربے ایمان کہاجارہاہے لیکن جب ہم حقائق بتانے کی بات کرتے ہیں یاکوٹہ بڑھانے کی توپھر ہمیں نیب اوراینٹی کرپشن والے بلالیتے ہیں ہم کاروباری لوگ ہیں ہم پیشیاں بھگتائیں یاکاروبار کریں۔جنوبی پنجاب کوگندم کاجوکوٹہ دیاجارہاہے اس سے روزانہ صرف ایک گھنٹہ فلورملزچل سکتی ہیں اس سے یہ صنعت تباہی کی طرف جارہی ہیے ہماری درخواست ہے کہ ایک ملک میں کئی ملک نہ بنائے جائیں،قانون اورمراعات سب کے لئے ایک جیسی ہونی چاہیے۔محکمہ خوراک نے جنوبی پنجاب سے 41لاکھ میٹرک ٹن گندم خریدی لیکن اتنی بڑی آبادی کوآٹامہیاکرنے کے لئے یہاں کی فلورملزکوصرف چھ لاکھ میٹرک ٹن گندم دینے کی اجازت دی گئی ہے۔فلورملز والے ہرسال 25لاکھ میٹرک ٹن گندم خریدتے تھے اس دفعہ حکومت نے ان کو گندم خریدنے سے منع کردیا،اب آٹابحران کے ذمہ دارفلورملز والے کیسے ہوگئے۔پورے پنجاب میں نوسوفلورملز ہیں جبکہ جنوبی پنجاب میں ساڑھے پانچ سوکے قریب ہیں اب ان کے پاس گند م پسائی کے لئے کوئی سٹاک نہیں ہے۔اس موقع پرمنعقد طورپرقراردادپاس کی گئی کہ جنوبی پنجاب کی فلورملز کاکوٹہ شہری ودیہی آبادی کے مطابق دیاجائے،کاروباری طبقے کونیب اوراینٹی کرپشن کی حراسمنٹ سے بچایاجائے۔ان اداروں کی طرف سے بغیر اطلاع بغیروارنٹ اوربغیرثبوت کاروباری جگہ پرا?کر لیبراورعملہ کو حراساں کرنے کاسلسلہ بندکیاجائے اورگندم آٹابحران کے حل کے لئے تمام سٹیک ہولڈرزسے مشاورت کی جائے۔اجلاس میں میاں شفیع انیس،میاں ادریس احمد شیخ،راؤ صدرالدین،شیخ اکبر علی،محمد اشفاق،محمد شفیق،سعید آغا،خواجہ عثمان،شہزاد علی خان دیگر نے شرکت کی۔

اکٹھ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -