لیکچرار اور پروفیسرز کو ٹائم سکیل نہ ملنے کا معاملہ،سندھ ہائیکورٹ نے صوبائی حکومت کی جمع کرائی گئی رپورٹ مسترد کردی

لیکچرار اور پروفیسرز کو ٹائم سکیل نہ ملنے کا معاملہ،سندھ ہائیکورٹ نے صوبائی ...
لیکچرار اور پروفیسرز کو ٹائم سکیل نہ ملنے کا معاملہ،سندھ ہائیکورٹ نے صوبائی حکومت کی جمع کرائی گئی رپورٹ مسترد کردی

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن)سندھ ہائیکورٹ نے 9 ہزار لیکچرار اور پروفیسرز کو ٹائم سکیل نہ ملنے کے معاملے پر سندھ حکومت کی جمع کرائی گئی رپورٹ مسترد کردی۔

نجی ٹی وی کے مطابق سندھ ہائیکورٹ میں صوبے بھر کے 9 ہزار لیکچراراورپروفیسرز کو ٹائم سکیل نہ ملنے کے معاملے پر سماعت ہوئی، درخواست گزارکی جانب سے موقف اختیارکیا گیا ہے کہ کالجز کے 9 ہزار لیکچراراورپروفیسرز ٹائم سکیل سے محروم ہیں ۔سندھ حکومت نے رپورٹ عدالت میں جمع کرا دی۔

عدالت نے کہاکہ یہ وہی سمری ہے جو وزیراعلیٰ کو دی گئی ،جسٹس محمد علی نے ایڈووکیٹ جنرل سے استفسارکیا کہ اس کانتیجہ کیا نکلا وہ عدالت کو بتائیں ،جسٹس محمد علی مظہر نے استفسار کیا کہ سندھ حکومت نے کمیٹی بنانے کاکہاتھا اس کاکیاہوا؟،عدالت کاوقت ضائع نہ کریں پیشرفت رپورٹ لے کر آئیں ۔

 اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل نے کہاکہ 2ہفتے کی مہلت دے دیں پیشرفت رپورٹ لے کرآئیں گے،عدالت نے سندھ حکومت کی جمع کرائی گئی رپورٹ مستردکردی،عدالت نے اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل سندھ پر اظہار برہمی کیا،عدالت نے سیکرٹری کالجز اورایڈیشنل سیکرٹری تعلیم کو 2 ستمبر کو طلب کرتے ہوئے سماعت ملتوی کردی۔

مزید :

علاقائی -سندھ -کراچی -