”کورونا وائرس کے باعث گھر میں جتنا عرصہ رہنا پڑا اس دوران۔۔۔“ ویمن کرکٹ ٹیم کی کپتان بسمہ معروف نے کیا کچھ سیکھ لیا؟ خود ہی بتادیا

”کورونا وائرس کے باعث گھر میں جتنا عرصہ رہنا پڑا اس دوران۔۔۔“ ویمن کرکٹ ٹیم ...
”کورونا وائرس کے باعث گھر میں جتنا عرصہ رہنا پڑا اس دوران۔۔۔“ ویمن کرکٹ ٹیم کی کپتان بسمہ معروف نے کیا کچھ سیکھ لیا؟ خود ہی بتادیا

  

لاہور (ویب ڈیسک) قومی ویمنز کرکٹ ٹیم کی کپتان بسمہ معروف کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس کے باعث گھر میں جتنا عرصہ رہنا پڑا اس دوران میں نے گراؤنڈ کی طرح گول روٹی اور پراٹھا بنانا سیکھ لیا ہے۔بسمہ معروف کا کہنا ہے کہ کھانا بنانا تو پہلے بھی آتا تھا لیکن روٹی اور پراٹھا نہیں بنا سکتی تھی جو اب مجھے آ گیا ہے۔ 5 ماہ سے گھر میں ہیں، گھر کے کام کاج تو بہت کر لیے اب بس کرکٹ کھیلنی ہے، ساتھی کرکٹرز کے ساتھ رابطہ رہتا ہے وہ بھی بس ایک ہی بات کہتی ہیں کہ اب گھر کے بہت کام کر لیے اب ہمیں کرکٹ کھلاؤ۔

انہوں نے کہا میں سمجھتی ہوں کہ پاکستان کرکٹ بورڈ کرکٹ کے دوبارہ سے آغاز کے لیے ایس او پیز تیار کر رہا ہو گا، اس کے لیے ہمیں بائیو سیکیور ماحول میں بھی رہنا پڑا تو رہیں گی کیونکہ کبھی ہم اتنا عرصہ کرکٹ سے دور نہیں رہیں اس لیئے ہمیں اب کرکٹ کھیلنی ہے، بس اب کرکٹ شروع ہونی چاہیئے۔

نجی ٹی وی سے خصوصی گفتگو میں بسمہ معروف نے کہا کہ میں خود کو خوش قسمت سمجھتی ہوں کہ مجھے سسرال بہت اچھا ملا، میری شادی فیملی میں ہوئی اور انہیں پہلے ہی علم تھا کہ میں کتنی مصروف رہتی ہوں اور مجھے کھیل کو کتنا وقت دینا پڑتا ہے، اس لیے انہیں کوئی مسئلہ نہیں ہوا بلکہ مجھے سسرال نے سپورٹ کیا اور یہی وجہ ہے کہ میں نے شادی کے بعد بھی کھیل جاری رکھا ہوا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اگر میرے سسرال والے مجھے سپورٹ نہ کرتے تو میں کب کی کرکٹ چھوڑ چکی ہوتی، میرے سسرال والے جڑانوالہ میں رہتے ہیں جب کہ مجھے کرکٹ کے لیے لاہور میں رہنا پڑتا ہے اس پر بھی انہوں نے کبھی اعتراض نہیں کیا۔

قومی کپتان کا کہنا تھا کہ میری ساس ڈینٹسٹ ہیں، انہیں علم ہے کہ ورکنگ ویمن کو کتنا مصروف رہنا پڑتا ہے، اس لیے میری ساس نے مجھے کبھی روکا ٹوکا نہیں بلکہ وہ مجھے متحرک رکھتی ہیں، میری حوصلہ افزائی کرتی ہیں اور میرے میچز کے بارے میں پوچھتی رہتی ہیں کہ میرے میچز کب شروع ہو رہے اور میری اگلی اسائمنٹ کیا ہے۔

مزید :

کھیل -