”عثمان بزدار پر شراب لائسنس کا کیس مذاق ہے“ وزیراعظم نے وزیراعلیٰ پنجاب کا دفاع کرنے کیساتھ ہی ان کا اصل مسئلہ بھی بتا دیا

”عثمان بزدار پر شراب لائسنس کا کیس مذاق ہے“ وزیراعظم نے وزیراعلیٰ پنجاب کا ...
”عثمان بزدار پر شراب لائسنس کا کیس مذاق ہے“ وزیراعظم نے وزیراعلیٰ پنجاب کا دفاع کرنے کیساتھ ہی ان کا اصل مسئلہ بھی بتا دیا

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) وزیراعظم پاکستان عمران خان نے ایک مرتبہ پھر وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کا دفاع کرتے ہوئے کہا ہے ان پر شراب لائسنس کا کیس مذاق ہے، عثمان بزدار کے پر لگنے والے ہر الزام کے بارے میں آئی بی سے ایک ایک چیز چیک کرواتا ہوں۔ 

تفصیلات کے مطابق نجی خبر رساں ادارے کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم پاکستان عمران خان نے کہا کہ عثمان بزدار کے بارے میں کوئی کچھ اور کوئی کچھ کہتا ہے۔ ان پر رنگ روڈ کا الزام لگایا گیا اور مجھے اس سارے معاملے کا بخوبی علم ہے جبکہ شراب لائسنس کا کیس مذاق ہے حالانکہ اس بابت ان سے پوچھنا ایکسائز کا کام ہے لیکن نیب نے بلا لیا، عثمان بزدار کے بارے آئی بی سے ایک ایک الزام چیک کراتا ہوں، سب سے بڑے صوبے کے وزیراعلیٰ کو اس کیس میں ایسے ہی بلا کر شک پیدا کر دیا گیا ہے۔ 

وزیراعظم نے کہا کہ اگر کیس تگڑا ہو تو سب سے پہلے میں عثمان بزدار سے عہدہ چھوڑنے کا کہوں۔ سردار عثمان بزدار کا مسئلہ یہ ہے کہ وہ میڈیا میں نہیں جاتے اور اپنا دفاع نہیں کرتے حالانکہ مجھے تمام معاملات کا پتہ ہے، افسوس کی بات ہے کہ ان پر طرح طرح کے الزامات لگائے جاتے ہیں، ہماری پارٹی کے اندر ایسے بہت سے لوگ موجود ہیں جو پنجاب کا وزیراعلیٰ بننا چاہتے تھے، وہ بھی عثمان بزدار کے بارے میں باتیں کرتے ہیں۔ وزیراعلیٰ پنجاب سے اصل باتیں نہیں پوچھی جاتیں، ان سے یہ پوچھیں کہ پنجاب میں کام ہو رہا ہے یا نہیں۔ 

ان کا کہنا تھا کہ پنجاب میں ہماری پارٹی پہلی بار اقتدار میں آئی ہے اور ہمیں وفاق و پنجاب میں اقتدار کا تجربہ نہیں تھا لیکن اس کے باوجود پنجاب میں جو منصوبہ بندی ہو رہی ہے، وہ تمام صوبوں سے آگے نکلے ہوئے ہیں، اور اب تو پنجاب میں آئی جی اور چیف سیکرٹری کا کمبی نیشن بھی درست ہے۔ 

مزید :

قومی -