ٹیکس وصولی کے اہداف کیلئے چور راستے بند کیے جائیں:اشرف بھٹی

ٹیکس وصولی کے اہداف کیلئے چور راستے بند کیے جائیں:اشرف بھٹی

  



لاہور (آن لائن)آل پاکستان انجمن تاجران کے صدر اشرف بھٹی نے کہا ہے کہ ٹیکسز وصولی کے اہداف کے حصول کیلئے چور راستوں کی بندش ، شرح میں کمی اور پیچیدگیوں کو ختم کر کے نظام کو سہل بنانا نا گزیر ہے ، وفاقی اور صوبائی مختلف محکموں کے ذریعے ٹیکسز کی وصولی بھی مسائل کی بنیادی وجہ ہے جس سے اربوں روپے قومی خزانے میں جانے کی بجائے مختلف لوگوں کی جیبوں میں چلے جاتے ہیں۔ اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ ہمیں عالمی مالیاتی اداروں کی ڈکٹیشن کی بجائے اپنے ماحول کو دیکھتے ہوئے پالیسیاں بنانا ہوں گی ۔ ٹیکسیشن پالیسی میں تبدیلی لانا وقت کی اہم ضرورت ہے جس کیلئے حکومت اور اس کے متعلقہ اداروں کو ہنگامی بنیادوں پر پیشرفت دکھانا ہو گی ۔ عام عوام سمیت تمام شعبوں کے ٹیکس دہندگان کو ٹیکسیشن پالیسی کی مشاورت میں شامل کیا جائے اور ان کی تجاویز کو نظر انداز کرنے کی بجائے زیر غور لایا جائے ۔ انہوں نے کہا کہ پہلے سے ٹیکس کی ادائیگی کرنے والوں کو گھیرے میں لینے کی بجائے ٹیکسز کی شرح میں کمی اور وصولی کیلئے پیچیدگیوں کو ختم کر کے اسے سہل بنانے سے ٹیکس کا دائرہ کا ربڑھایا جا سکتا ہے ۔ ایس آر اوز کے ذریعے نئے ٹیکسز کے نفاذ کے سلسلے کو روکا جانا چاہیے ۔ اشرف بھٹی نے کہا کہ ہم متعدد بار پیشکش کر چکے ہیں کہ نئے ٹیکس گزاروں کی تلاش کیلئے خود مارکیٹوں کے سروے کرانے کے لئے تیار ہیں لیکن بد قسمتی سے حکومت اور متعلقہ اداروں کی جانب سے تنظیموں کی تجاویز کو خاطر میں نہیں لایا جاتا ۔ انہوں نے مزید کہا کہ وفاقی اور صوبائی مختلف محکموں کے ذریعے ٹیکسز وصولی سے چور راستے کھلتے ہیں جنہیں بند کرکے ایک ہی جگہ وصولی کا موثر نظام لایا جانا چاہیے ۔

مزید : کامرس