یمنی فوج نے حوثی جیل پر دھاوا بول کرتمام قیدی چھڑا لیے

یمنی فوج نے حوثی جیل پر دھاوا بول کرتمام قیدی چھڑا لیے

  



صنعاء(این این آئی)یمن کی سرکاری فوج نے شبوہ گورنری کے علاقے بیحان میں ایران نواز حوثی باغیوں کی قائم کردہ ایک جیل پر دھاوا بولا اور جیل میں قید کیے گئے شہریوں کو چھڑا لیا۔عرب ٹی وی کے مطابق سماجی کارکنوں نے سوشل میڈیا پر کچھ تصاویر اور ویڈیوز پوسٹ کی ہیں جن میں حوثیوں کی ایک جیل پر یمنی فوج کے دھاوے کے مناظر دکھائے گئے ہیں۔ذرائع کا کہنا تھا کہ قومی مزاحمتی فورسز اور یمنی فوج نے جیل اور اس کے اطراف کے علاقوں کو حوثی باغیوں سے چھڑا لیا۔ یمنی فوج نے جیل پر دھاوا بول کر عسیلان اور بیحان ڈاریکٹوریٹ سے گرفتار کرکے جیل میں ڈالے گئے تمام قیدیوں کو چھڑا لیا۔ یمنی باغیوں اور حکومتی فورسز کے درمیان بیحان جیل اور اس کے اطراف میں 17 گھنٹے تک لڑائی جاری رہی۔خیال رہے کہ بیحان اور عسیلان جنوب مشرقی یمن کی شبوہ گورنری میں حوثی باغیوں کے اہم ترین تزویراتی ٹھکانے تھے جنہیں باغیوں سے چھڑالیا گیا ہے۔ عسکری ماہرین کا کہنا تھا کہ بیحان اور عسیلان کے علاقوں میں باغیوں کو شکست جنوب مشرقی یمن میں حوثیوں پر کاری ضرب ہے۔ اس کے نتیجے میں دیگر گورنریوں کے مقبوضہ علاقوں کو باغیوں سے چھڑانے کا عمل مزید تیز ہوجائے گا۔سعودی عرب کی قیادت میں یمن میں آئینی حکومت کی عمل داری کے لیے سرگرم فوجی اتحاد نے جمعہ کے روز عسیلان اور بیحان میں فضائی آپریشن شروع کیا تھا۔بیحان شبوہ گورنری کیشمال مغرب میں واقع 616 مربع کلو میٹر کا اہم ترین علاقہ ہے۔ شہر کے دارالحکومت عتق سے اس کا فاصلہ 210 کلو میٹر ہے۔ اس کے شمال میں عسیلان گورنری واقع ہیں۔ عسیلان 17 ضمنی ڈاریکٹوریٹس پر مشمتل ہیں۔ یہ رقبے کے اعتبار سے یمن کی تیسری بڑی گورنری ہے۔

مزید : عالمی منظر