جرمنی میں سینکڑوں کی موجودگی کا انکشاف، دہشت گردانہ حملوں کا خطرہ

جرمنی میں سینکڑوں کی موجودگی کا انکشاف، دہشت گردانہ حملوں کا خطرہ

  



برلن(این این آئی)جرمن سکیورٹی حکام نے کہاہے کہ ملک کو ایسے شدت پسندوں کی طرف سے ممکنہ دہشت گردانہ حملوں کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے، جن کی کل تعداد اب سات سو بیس بنتی ہے اور جن میں درجنوں کی تعداد میں نابالغ نوجوان اور خواتین بھی شامل ہیں۔میڈیارپورٹس کے مطابق تحفظ آئین کا وفاقی دفتر کہلانے والی اندرون ملک سلامتی کی نگران جرمن انٹیلیجنس سروس(بی ایف وی ) کے سربراہ ہنس گیورگ مآسین نے کہاکہ ملک میں امن عامہ کے لیے خطرہ سمجھے جانے والے افراد کی فہرست میں شامل اور تشدد پر آمادہ جنگجوؤں کی تعداد میں مزید اضافہ ہوا ہے۔انہوں نے کہاکہ ان سات سو سے زائد خطرناک جنگجوؤں کی فہرست میں درجنوں کی تعداد میں مسلمان خواتین کے علاوہ ایسے نوجوانوں کے نام بھی شامل ہیں، جن کی عمریں اٹھارہ برس سے کم ہیں۔ اس فہرست میں ترمیم کے بعد جن مزید افراد کے نام شامل کیے گئے ہیں، وہ ملکی انٹیلیجنس حکام کی طرف سے باقاعدہ تفتیش اور نگرانی کے بعد اس لسٹ کا حصہ بنے۔

مزید : عالمی منظر


loading...