افغانستان سمیت دیگر ممالک سے بہتر تعلقات بہت ضروری ہیں،آفتاب شیرپاؤ

افغانستان سمیت دیگر ممالک سے بہتر تعلقات بہت ضروری ہیں،آفتاب شیرپاؤ

  



چارسدہ(آن لائن) قومی وطن پارٹی کے مرکزی چیئرمین آفتاب احمد خان شیرپاؤ نے موجودہ ملک کی اندرونی و بیرونی صورتحال کے پیش نظر تمام پارٹیوں کو ذاتی اور پارٹی مفادات سے بالاتر ہوکر پارلیمنٹ کی مضبوطی اور جمہوریت کے استحکام کیلئے ون پوائنٹ ایجنڈا پر متحد ہونے کی تجویز پیش کرتے ہوئے کہا کہ پانامہ کیس کے بعد غیر یقینی صورتحال ہے ، ترقیاتی منصوبوں سمیت دیگر اہم اُمور پس پشت چلے گئے ہیں اور فاٹا ریفارمز، انضمام، سی پیک پر غیر ضروری تاخیر ہورہی ہے جبکہ خطے میں پائیدار امن کی قیام اور ملک کی استحکام کیلئے خارجہ پالیسی کو فعال بناکر پاک افغان سمیت دیگر ممالک سے بہتر تعلقات بہت ضروری ہے اور کہا کہ نیشنل ایکشن پلان پر عمل درآمد یقینی بنانا ناگزیر ہوگیا ہے۔ اُنہوں نے اس اُمید کا اظہار کیا کہ جنوری کے آخر تک قبائلی علاقوں میں ایف سی آر کے خاتمے، قبائلیوں کو پشاور ہائیکورٹ تک رسائی دینے، صوبہ کے ساتھ انضمام، این ایف سی ایوارڈ میں اُن کیلئے 3 فیصد کوٹہ مختص کرنے کو منطقی انجام تک پہنچ جائیں گے اورکہا کہ صوبہ میں اچھا خاصا مذہبی ووٹ موجود ہے تاہم ایم ایم اے کی بحالی کئی وجوہات کی بناء پر پہلے کی طرح مؤثر اور فعال نہیں ہوگی۔ اِن خیالات کا اظہار اُنہوں نے محمدزئی یونین آف جرنلسٹس کے پینل سے خصوصی گفتگو کے دوران کیا۔ اُنہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی اپنے تبدیلی کے وعدے ایفاء نہیں کرسکے، صوبائی احتساب کمیشن بے یارو مددگار پڑا ہے، بلدیاتی نظام میں نت نئے قانون سازی کرکے غیر مؤثر بنادیا گیا ہے، تعلیم کی مد میں گزشتہ بجٹوں میں اربوں روپے فنڈز مختص کئے گئے جس میں بمشکل چند ارب روپے خرچ کئے گئے ۔

مزید : صفحہ آخر


loading...