قائد اعظم کے پاکستان کی تشکیل کیلئے پھر اسی ولولے اور عزمکی ضرورت ہے : مقررین

قائد اعظم کے پاکستان کی تشکیل کیلئے پھر اسی ولولے اور عزمکی ضرورت ہے : مقررین

  



فیصل آباد(سپیشل رپورٹر) طلباء اور نوجوانوں کو قائد اعظمؒ کے پاکستان کی تشکیل کیلئے ایک بارپھر قیام پاکستان والے ولولے وعزم کی ضرورت ہے۔قائد اعظم کے پاکستان کی تلاش کیلئے عقیدے، مسلک، برادری اور گروہ کی قید سے آزاد ہو کر سوچنا ہوگا۔ قائد کا پاکستان عوام کے حقوق کے تناظر میں جو تصویر پیش کر رہا ہے وہ اقبال کے خواب اور جناح کی امیدوں سے متصادم ہے۔ طلبہ اور نوجوانوں کو پھر تشکیل پاکستان کیلئے اسی عزم کے ساتھ کام کرنا ہو گا۔ ان خیالات کااظہار نوجوانوں کی سب سے بڑی منظم تنظیم ’پازیٹوپاکستان‘ کے زیراہتمام بانی پاکستان قائد اعظم محمد علی جناحؒ کی یاد میں تقریبات کے سلسلہ میں کالج یونیورسٹیوں کے سینکڑوں طلباء وطالبات اور نوجوانوں کے اجتماع ’جناح یوتھ سمٹ‘ سے خطاب کرتے ہوئے سابق سفیر وسینئر کالم نگارڈاکٹر حسین احمد پراچہ، صدر پازیٹو پاکستان عابد اقبال کھاری،نائب صدر چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری فاروق یوسف، چیئرمین پی پی کے چو دھری اکرام زاہدایڈووکیٹ سپریم کورٹ، رہبر پی پی کے عمیر رضا،پروگرام آرگنائزر ولید اصغر اوردیگر نے خطاب کرتے ہوئے کیا۔کمپیئرنگ کے فرائض سعد مقبول، سیماب عارف اور شمائلہ سلیمان نے نبھائے ڈرامائی انداز میں پیغام جناح وملی نغمہ کپور اینڈ سنزاور ساندل ناٹک نے نوجوانوں کے سامنے پیش کیا۔ تقریب کے انعقادمیں ڈپٹی کوآرڈینیٹر اویس رضا جولاہا، محمد امجد، حمزہ ودیگر کارکنوں نے نظم ونسق کو بہتر بنانے کیلئے صلاحیتوں کا بہترین استعمال کیا۔ نوجوانوں سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہا کہ کامیاب ریاست چلانے کے جو اصول قائداعظم نے دئیے تھے انہیں طالع آزما ؤں نے اقتدار کی ہوس اور ذاتی مفادات کی خاطر فراموش کر دیا۔ ادارے کمزور اور آئین کو غیر محفوظ بنا دیا گیا۔قائد اعظم نے عزم و ہمت اور ولوے کے ساتھ ناممکن کو ممکن بنایا۔ قائد اعظم کے پاکستان کی تلاش کیلئے عقیدے، مسلک، برادری اور گروہ کی قید سے آزاد ہو کر سوچنا ہوگا۔ پاکستان ملت اسلامیہ کا بنیادی مطالبہ تھا۔ آج بھی ضرورت اس امر کی ہے کہ آپس میں تفریق کے سوالات ختم کئے جائیں اور ملکی استحکام کیلئے ضروری ہے کہ اتحاد و یگانگت کو فروغ دیا جائے۔ تمام دینی اور سیاسی طبقات کو ایک پلیٹ فارم پر اکھٹے ہو کر کام کرنا ہو گا تاکہ اس فرسودہ نظام سے چھٹکارا پایا جا سکے۔قائد کو خراج تحسین اور خراج عقیدت کا بہترین طریقہ یہ ہے کہ اس کے فرمودات پر عمل کیا جائے، قائد اعظم محمد علی جناح نے پاکستان کی صورت میں ایک عظیم تاریخ رقم کی ہے جو قیامت تک قائم و دائم رہے گا۔ پاکستان پر کڑا وقت ہے جو نوجوانوں اور طلبہ سے بیدار ہونے کا متقاضی ہے۔ انہوں نے کہا کہ طالب علم حصول علم اور نوجوان تعمیری رویوں کے فروغ پر محنت کریں تو وہ وقت دور نہیں جب پاکستان بحرانوں سے نکل کر ترقی کی راہ پر گامزن ہو گا۔ مہمانوں نے پازیٹو پاکستان کا شکریہ ادا کیا کہ اس تنظیم کے کارکنوں نے بانی پاکستان قائد اعظم محمد علی جناحؒ کی خدمات کو نوجوانوں میں روشناس کرانے کیلئے ایک اہم ترین کانفرنس’’جناح یوتھ سمٹ ‘‘کا انعقاد کیا۔ آخر میں مہمانوں اور کارکردگی دکھانے والوں کو شیلڈز اور سرٹیفکیٹس تقسیم کئے گئے۔

جناح یوتھ۔ مقررین

مزید : علاقائی