پتوکی :نومولود کی نعش پوسٹمارٹم کیلئے ہسپتال پہنچی تو بچہ زندہ نکلا

پتوکی :نومولود کی نعش پوسٹمارٹم کیلئے ہسپتال پہنچی تو بچہ زندہ نکلا

  



پتوکی (نامہ نگار)تحصیل پتوکی کے علاقے بلوکی تھانہ سرائے مغل میں لڑکی نے اپنا گناہ چھپانے کیلئے بچہ جنم دیکر ایک بوری میں بند کر کے بھٹہ کے قریب پھینک دیا۔تھانہ سرائے مغل پولیس نے بچہ مردہ قرار دیکر نامعلوم خاتون کے خلاف مقدمہ درج کر لیا۔نعش پوسٹ مارٹم کیلئے جب تحصیل ہیڈکوارٹر ہسپتال پتوکی پہنچی تو بچہ زندہ نکلا۔بچہ پتوکی سے لاہو ر ہسپتال منتقل کر دیا گیا ۔تفصیلات کے مطابق تھانہ سرائے مغل کے علاقے بلوکی میں ایک لڑکی نے اپنا گناہ چھپانے کیلئے بچے کو جنم دیکر اس کو بوری میں بند کر کے گاؤں کے قریب ایک بھٹہ کے ساتھ پھینک دیا نامعلوم افراد نے سرائے مغل پولیس کو فون کر کے اطلاع دی کہ ایک نومولود بچہ پڑا ہوا ہے جس پر پولیس نے اپنی کارکردگی دکھاتے ہوئے فوری طور پر بچے کو خود ہی مردہ قرار دیکر تھانہ سرائے مغل میں شہباز مسیح نامی ایک شخص کی مدعیت میں نامعلوم لڑکی کے خلاف مقدمہ درج کر لیا اور بچے کو لیکر پوسٹ مارٹم کیلئے تحصیل ہیڈکوارٹر ہسپتال پتوکی پہنچ گئے ڈاکٹروں نے جب بچے کو چیک کیا تو بچہ زندہ نکلا۔جس کو فوری طور پر ابتدائی طبی امداد فراہم کی گئی اور بچے کو ہسپتال میں داخل کرلیا گیا تاہم پولیس کی طرف سے مردہ قرار دیئے گئے بچے کو بہتر طبی سہولیات کیلئے تحصیل ہیڈکوارٹر ہسپتال پتوکی سے لاہور چلڈرن ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے جہاں ڈاکٹر انہیں طبی امداد دی جارہی ہے ۔جسے اللہ بچائے اسے کون مارے یہ کہاوت سچ ثابت ہوگئی۔صحافیوں صدر ڈسٹرکٹ یونین آف جرنلسٹ رانا محبوب احمد ، چیئر مین خواتین ونگ حاجن سلمیٰ بی بی ، علی حسنین بھٹی اور دیگر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہو ئے ایس ایچ او سرائے مغل نے کہا کہ بچے کے متعلق جیسے ہی پتہ چلا اس کو فو ری طور پر تحصیل ہیڈ کوا ٹر ہسپتال پتو کی متقل کیا ۔ جبکہ لڑکی کی تلا ش میں خصو صی ٹیم تشکیل دی گئی ہے۔

نومولود

مزید : علاقائی


loading...