افغانستان میں فضائی حملے، جھڑ پیں، 38طالبان ہلاک

افغانستان میں فضائی حملے، جھڑ پیں، 38طالبان ہلاک

  



کابل(آئی این پی)افغانستان کے12صوبوں میں فضائی حملوں اور خصوصی جھڑپوں کے دوران کم از کم 38طالبان عسکریت پسندوں کو ہلاک کر دیا گیا ہے،جھڑپوں میں 11طالبان کو گرفتار بھی کیا گیا ہے، یہ کارروائیاں چہار درہ، قندھار، لوگر، ننگر ہار، لغمان، کاپیسا، ہرات، فاریاب، دیہہ،وردک، ہلمنداور پکتیکا میں کی گئیں۔ بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق فوجی عہدیداروں نے منگل کو میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ گذشتہ 24گھنٹوں کے دوران 12 صوبوں میں فضائی حملوں اور خصوصی دستوں کے چھاپوں کے کم از کم 38طالبان عسکریت پسندوں کو ہلاک کیا گیا ہے۔سپیشل فورسز نے یہ کارروائی قندوز کے چہار درہ اور امام صاحب اضلاع، قندھار کے شاہ ولی کوٹ، لوگر کے برکی بارک، ننگر ہارسار، لغمان کے قرغ الل، کاپیسا کے نجراب، ہرات کے شندند، فاریب کے المر، دیہہ میں کیا۔ غزنی کا یاک اور ہلمند کا نو زاد میں کی گئی۔فوجی عہدیداروں کے مطابق اسپیشل فورس نے ان ہی کارروائیوں کے دوران 11 طالبان عسکریت پسندوں کو بھی گرفتار کیا اور اسلحہ کے متعدد ذخیرے کو بھی تباہ کردیا۔عہدیداروں نے مزید کہا کہ سیکیورٹی فورسز نے قندوز کے چاہ بہار، قندھار کے شاہ ولی کوٹ، وردک کے جلریز، ہلمند کے ناد علی اور برمل کے پکتیکا میں فضائی حملے کیے۔طالبان گروپ نے اب تک کی جانے والی کارروائیوں اور فضائی حملوں کے بارے میں کوئی تبصرہ نہیں کیا ہے۔فغانستان میں ایک گاڑی سڑک کنارے نصب بم سے ٹکرانے کے نتیجے میں خواتین3بچوں سمیت10 شہری جاں بحق ہو گئے ہیں۔ بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق مشرقی افغانستان میں منگل کے روز سڑک کنارے نصب ایک بم کے پھٹنے سے دس شہری ہلاک ہو گئے، جن میں خواتین اور بچے بھی شامل ہیں۔ افغان وزارت داخلہ کے ترجمان نصرت رحیمی نے بتایا کہ یہ بم حملہ صبح کے وقت صوبے خوست کے ضلع علی شیر میں کیا گیا۔ ہلاک شدگان ایک گاڑی میں سفر کر رہے تھے کہ ان کی گاڑی اس بم کی زد میں آ گئی۔ مرنے والوں میں سے پانچ مرد تھے، دو خواتین اور تین بچے۔ حکام نے اس حملے کا ذمے دار طالبان کو قرار دیا ہے۔

مزید : علاقائی