عمران خان نے مہاتیر اور اردوان کو اعتماد میں لے کر سعودی تحفظات سے آگا ہ کیا 

عمران خان نے مہاتیر اور اردوان کو اعتماد میں لے کر سعودی تحفظات سے آگا ہ کیا 

  



جنیوا،کوالالمپور (مانیٹرنگ ڈیسک،نیوزایجنسیاں) وزیراعظم عمران خان نے ملائیشین ہم منصب ڈاکٹر مہاتیر محمد کو فون کرکے کوالالمپور کانفرنس میں شرکت نہ کرنے اور اس حوالے سے سعودی عرب کے تحفظات سے آگاہ کیا ہے۔ذرائع کے مطابق وزیراعظم عمران خان کے دورہ سعودی عرب کے دوران ملائیشیا میں ہونیوالی 6 اسلامی ممالک کے سربراہی اجلاس پر سعودی عرب کی قیادت نے تحفظات کا اظہار کیا تھا۔ملائیشین وزیراعظم ڈاکٹر مہاتیر محمد کے دفتر کی جانب سے جاری بیان میں دورہ منسوخ کرنے کی بروقت اطلاع دینے پر وزیراعظم پاکستان کو سراہا ہے۔ادھر وزیراعظم عمران خان نے ترک صدر طیب اردگان سے ملاقات کی اور ملائیشیاء میں ہونیوالی سمٹ میں شرکت نے کرنے سے متعلق ترک صدر کو اعتماد میں لیا۔ملاقات میں عمران خان نے مزیدکہاکہ میں امت مسلمہ کومتحد دیکھنا چاہتا ہوں۔؎سفارتی ذرائع کے مطابق وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی کوالاالمپور سمٹ میں شرکت نہیں کریں گے۔وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے وزیراعظم عمران خان کی جگہ کوالاالمپور سمٹ میں شرکت کرنا تھی۔ دوسری طرف وزیراعظم عمران خان نے گلوبل پناہ گزینوں کے عالمی فورم سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مسئلہ کشمیر سے 2 ایٹمی طاقتوں میں تنازع کاخطرہ ہے، 80 لاکھ کشمیریوں کو نظر بند کر دیا گیا۔ لوگ گھروں اور کشمیری رہنما جیلوں میں بند ہیں، عالمی برادری سے کشمیر پر نوٹس لینے کی اپیل کی تھی۔وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ ترقی پذیرممالک کیلئے مہاجرین کی میزبانی مشکل کام ہے،مہاجرین کی بے مثال میزبانی پرپاکستانی عوام پرفخر ہے،بے بس اور بے وسیلہ مہاجرین کے مسائل کا امیر ملک ادراک نہیں کرسکتے، بھارتی حکومت نے آسام میں متنازعہ شہریت قانون نافذ کر دیا، بھارتی شہری گلیوں میں نکل آئے ہیں، مقبوضہ وادی میں 80 لاکھ کشمیری محاصرے میں ہیں، جان بوجھ کر مسلم اکثریت کو اقلیت میں بدلا جا رہا ہے۔عمران خان کا کہنا تھا پاکستان کو انسانی تاریخ کے سب بڑے مہاجر مسائل کا سامنا رہا، پاکستان 30 لاکھ مہاجرین کی میزبانی کر رہا ہے، پاکستان کو بیروزگاری جیسے مسائل کا سامنا ہے، مہاجرین کی باعزت واپسی کیلئے موزوں حالات پیدا کرنا ہونگے، پاکستان افغان عمل امن میں بھرپور کردار ادا کر رہا ہے۔عمران خان نے کہا ہے کہ دنیا سے ایسے حالات کا خاتمہ کرنا ہوگا جس سے لوگ پناہ گزین بنتے ہیں، عمران خان نے کہا کہ پہلے ریفیوجی گلوبل فورم کے انعقاد پر بہت خوشی ہے اور میں دنیا میں سب سے زیادہ مہاجرین کی میزبانی کرنے پر ترک صدر رجب طیب اردوان کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں۔

عمران خان

مزید : صفحہ اول