بھارت کاہر سال انسانی حقوق کونسل میں پاکستان مخالف منظم مہم چلانے کا انکشاف

بھارت کاہر سال انسانی حقوق کونسل میں پاکستان مخالف منظم مہم چلانے کا انکشاف

  



  اسلام آباد (سٹاف رپورٹر)یورپی یونین میں فیک نیوز کے حوالے سے کام کرنیوالے تحقیقی ادارے”ای یو ڈس انفو لیب“ کی چشم کشاحقائق پر مبنی رپورٹ منظر عام پر آگئی ہے جس میں ہر سال اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کے اجلاس کے دوران منظم طریقے سے پاکستان مخالف مہم چلانے کا انکشاف کیا گیا۔ برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی نے رپورٹ جاری کر دی، تفصیلی رپورٹ میں ہر سال اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کے اجلاس کے دوران منظم طریقے سے  پاکستان مخالف مہم چلانے کا انکشاف ہوا ہے۔ رپورٹ میں کہاگیاکہ پاکستان مخالف مہم چلانے والی تنظیموں کے تانے بانے بھارت کے کاروباری ادارے”سری واستوا“ سے ملتے ہیں۔ رپورٹ میں کہاگیاکہ پاکستان مخالف نیٹ ورک کا مقصد بھارتی بیانیے کا فروغ، بالخصوص پاکستان پرتنقید کرنا ہے، دنیا کے 65 سے زائد ممالک میں 260 سے زائد فیک نیوز ویب سائٹ انڈیا کے مفاد میں کام کر رہی ہیں۔ای یو ڈس انفو لیب میں کہاگیاکہ یورپین آرگنائزیشن فار پاکستانی مایناریٹی کے تانے بانے بھی بھارت سے ملتے ہیں، مایناریٹی نے اقوام متحدہ کے دفاتر کے باہر پروپیگنڈے پر مبنی پاکستان مخالف مظاہرے کیے،یورپین آرگنائزیشن فار پاکستانی مایناریٹی کا تعلق بھی،، سری واستوا،، نامی نیٹ ورک سے ثابت ہوا ہے۔ رپورٹ کے مطابق اس نیٹ ورک میں 250 سے زائد جعلی ویب سائٹس پرانے، غیر فعال یا جعلی اخباروں سے بھارتی بیانیے اور پاکستان مخالف خبریں شائع کر رہی ہیں۔ رپورٹ میں کہاگیاکہ سری واستوا نیٹ ورک کا مقصد جنیوا اور برسلز میں پالیسی سازوں تک رسائی حاصل کرنا اور انکے خیالات پر اثر انداز ہونا تھا، رپورٹ کے مطابق سری واستوا گروپ کے درج پتے اور ٹیلی فون نمبرز بھی جعلی ہیں، رپورٹ کے مطابق سری واستوا گروپ کے ذیلی ادارے آیی آیی این ایس نے رواں سال اکتوبر میں یورپی پارلیمان کے چند عہدیداران کو مقبوضہ کشمیر کا دورہ بھی کرایا۔ بی بی سی کے مطابق سری واستوا گروپ کی ایک ممبر ماڈی شرما عرف مادھو شرما یورپی پارلیمان میں متعدد بار پاکستان مخالف بیانیے پر کام کر چکی ہیں،ای یو ڈس انفو لیب کی رپورٹ کے حوالے سے  متعدد بار سری واستوا گروپ کے سربراہ انکت سری واستوا اور ماڈی شرما سے رابطے کی کوشش کی گیی لیکن جواب نہیں دیا گیا۔ سوشل میڈیا فیک نیوز ریسرچر کارل ملر کے مطابق سری واستوا نیٹ ورک کا اثرورسوخ آن لائن اور آف لائن دونوں جگہ پر ہے، مستقبل میں پروپیگنڈا اس سے بھی زیادہ خطرناک شکل اختیار کر سکتا ہے۔

پاکستان مخالف منظم بھارتی مہم 

مزید : صفحہ اول


loading...