مشرف غداری کیس، خصوصی عدالت کی تشکیل کیخلاف درخواست پر فل بنچ بنانے کی سفارش

 مشرف غداری کیس، خصوصی عدالت کی تشکیل کیخلاف درخواست پر فل بنچ بنانے کی ...

  



  لاہور(نامہ نگار)لاہور ہائی کورٹ نے سنگین غداری کیس میں سابق صدر جنرل (ر)پرویز مشرف کا ٹرائل کرنے والی خصوصی عدالت کو فیصلہ سنانے سے روکنے کی فوری استدعا کی درخواست مستردکردی،فاضل جج نے کیس کی سماعت کے لئے فل بنچ تشکیل دینے کی سفارش کرتے ہوئے فائل چیف جسٹس لاہورہائی کورٹ کو واپس بھجوادی ہے،عدالت نے قراردیا ہے کہ خصوصی عدالت کی تشکیل پر اہم نکات اٹھائے گئے ہیں، اس اہم نکتے پر بحث کے لئے فل بنچ تشکیل دینے کی سفارش کی گئی ہے۔مسٹرجسٹس سید مظاہر علی اکبر نقوی نے پرویز مشرف کی درخواست پر سماعت کی،کیس کی سماعت شروع ہوئی تو فاضل جج نے پرویز مشرف کے وکلاء اظہر صدیق اورخواجہ طارق رحیم پیش ہوئے،فاضل جج نے استفسار کیا کہ آپ کا درخواست گزارکہاں کا رہنے والا ہے؟ جس پر اظہر صدیق ایڈووکیٹ نے بتایا کہ پرویز مشرف اسلام آباد کے رہائشی ہیں، فاضل جج نے کہا کہ جب تمام فریقین اسلام آباد کے رہائشی ہیں تو لاہور ہائیکورٹ کیسے سن سکتی ہے؟ کوئی ایک کیس بتا دیں جس میں کسی دوسری ہائیکورٹ نے سماعت کر کے فیصلہ دیا ہو، جس پر اظہر صدیق ایڈووکیٹ نے کہا کہ ایل پی جی کیس موجود ہے، جس پر فاضل جج نے کہا کہ آپ کی بات سنتے رہے ہیں مگر علاقائی دائرہ اختیار کا فیصلہ تو ہم نے ہر صورت کرنا ہے۔ ایڈیشنل اٹارنی جنرل اشتیاق احمد خان نے عدالت کو بتایا کہ خصوصی عدالت نے پراسکیوشن کو کہا تھا کہ آج تحریری دلائل جمع کروائے جائیں،پرویز مشرف کا ضابطہ فوجداری کی دفعہ 342 کے تحت بیان ہی موجود نہیں، پراسکیوشن نے کہا ہے کہ خصوصی کمیشن پرویز مشرف کے پاس بھجوایا جائے، جس پر فاضل جج نے کہا کہ یہ کیسے ہو سکتا ہے کسی آدمی کا ضابطہ فوجداری کی دفعہ 342 کا بیان ہی نہ ہو تو فیصلہ سنا دیا جائے، پرویز مشرف کے وکیل خواجہ طارق رحیم نے کہا کہ عدالت فل بنچ بنا دے اور خصوصی عدالت کو فیصلہ سنانے سے روکا جائے، جس پر فاضل جج نے کہا کہ وہ تو اسلام آباد ہائیکورٹ نے تو پہلے ہی روک رکھا ہے، جس پر اظہر صدیق ایڈووکیٹ نے کہا کہ فیصلہ سنانے سے نہیں روکا گیا، خصوصی عدالت نے 17دسمبر(منگل)کے روزفیصلہ سنانے کا عبوری حکم جاری کر رکھا ہے، ہم نے موقف اختیار تھا کہ وزیراعظم کو خصوصی عدالت تشکیل دینے کا اختیار نہیں تھا، فاضل جج نے کہا کہ میں اس فائل کو فل بنچ کے لئے چیف جسٹس کو بھجوا دوں گا، عدالت نے مذکورہ بالا حکم کے ساتھ کیس کی مزید سماعت آج 18دسمبر پر ملتوی کردی۔

جج ریمارکس

مزید : صفحہ اول