آئی ٹی میں انقلا ب اگلی دہائی کا تقاضا، اس کیلئے بروقت تیار ی ضروری: عارف علوی

      آئی ٹی میں انقلا ب اگلی دہائی کا تقاضا، اس کیلئے بروقت تیار ی ضروری: ...

  



اسلام آباد (آن لائن) صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے مصنوعی ذہانت، بلاک چین، روبوٹکس اور انٹرنیٹ آف تھنگز (آئی او ٹیز) کی اہمیت کو اجاگر کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان میں اگلی دہائی انفارمیشن اینڈ کمیونیکیشن ٹیکنالوجیز کے انقلاب کی دہائی ہو گی، اس کیلئے پاکستان کو ضروری اجزاء درکار ہوں گے، اس حوالہ سے ملک کے صنعتی شعبوں کو بروقت تیاری کرنی چاہئے۔وہ منگل کو یہاں ایوان صدر میں ایمرجنگ ٹیکنالوجیز کے بارے میں ٹاسک فورس کے اجلاس کی صدارت کر رہے تھے۔ اجلاس میں وفاقی وزیر برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی اینڈ ٹیلی کمیونیکیشن خالد مقبول صدیقی اور ملک بھر سے آئی ٹی ماہرین نے شرکت کی۔ صدر مملکت نے کہا کہ ڈیجیٹل لحاظ سے تبدیلی کئی عناصر کی حامل ہے جن میں ڈیجیٹل شناخت، مشترکہ ڈیٹا سروسز، مشترکہ کاروباری طریقہ ہائے کار، ٹیکنالوجی مراکز اور سرکاری شعبہ میں ان کے استعمال کیلئے سہولیات فراہم کرنا شامل ہیں، اختراعی ایکو سسٹم کی تیاری بھی ایک اہم جزو ہے۔ صدر مملکت نے کہا کہ حکومت ابھرتی ہوئی ٹیکنالوجیز کے شعبہ میں مختلف سٹارٹ اپس کے ذریعے جدت کے ماحول کو فروغ دینے کیلئے کوشاں ہے۔ اسی طرح سائبر آلات اور ایپس کو صحت، تعلیم، آبادی کی منصوبہ بندی، بائیو ٹیکنالوجی اور سکیورٹی کے شعبوں میں بھی بروئے کار لایا جانا چاہئے۔ اندازہ ہے کہ ٹیکنالوجی کی بڑی کمپنیوں نے 2016ء میں اس شعبہ میں 20 سے 30 ارب ڈالر خرچ کئے ہیں جس میں سے 90 فیصد تحقیق و ترقی اور 10 فیصد مصنوعی ذہانت کے حصول پر خرچ کئے گئے ہیں۔دریں اثناصدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی سے ایشیئن انفراسٹرکچر انویسٹمنٹ بینک  کے صدر جن لیکون نے ملاقات کی۔ اس موقع پر ایشیئن انفراسٹرکچر بینک کے صدر نے کہا کہ ان کا بینک پاکستان کی سماجی و اقتصادی ترقی کے حوالہ سے مکمل طور پر پرعزم ہے۔ انہوں نے صدر مملکت کو بتایا کہ اے  آئی آئی بی نے حکومت پاکستان کی ترجیحات کے مطابق متعدد ترقیاتی منصوبوں کو فنانس کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ صدر مملکت نے آئی آئی بی کی جانب سے ایم 4 گوجرہ۔شورکوٹ موٹروے کیلئے 10 کروڑ ڈالر اور تربیلا V ہائیڈرو پاور پراجیکٹ کیلئے 30 کروڑ ڈالر کی فنڈنگ کی فراہمی کو سراہا۔

صدر مملکت

مزید : صفحہ آخر


loading...