کلنک کا ٹیکہ دو فیصد وکلاء نے سو فیصد وکلاء کو یرغمال بنا رکھا ہے: جسٹس مظاہر علی نقوی

 کلنک کا ٹیکہ دو فیصد وکلاء نے سو فیصد وکلاء کو یرغمال بنا رکھا ہے: جسٹس مظاہر ...

  



لاہور(نامہ نگار)لاہور ہائی کورٹ کے مسٹرجسٹس سید مظاہرعلی اکبر نقوی اور مسٹر جسٹس سرداراحمد نعیم پر مشتمل ڈویژن بنچ نے پی آئی سی حملہ کیس میں گرفتاروکلاء کی رہائی اور گھروں پر چھاپوں کے خلاف دائر درخواستوں پرچیف سیکرٹری، آئی جی پنجاب، صوبائی سیکرٹری داخلہ کو نوٹس جاری کرتے ہوئے آج 18دسمبر کو طلب کر لیاہے،عدالت نے دوران سماعت ریمارکس دیئے کہ جنہوں نے کلنک کاٹیکہ لگایا وہ دو فیصد ہیں،دو فیصد نے 100 فیصد وکلاء کو یرغمال بنا رکھا ہے، ایسے وکلاء کے خلاف بارنے کیوں کاروائی نہیں کی،ہم اپنے آپ کو محدود کرکے لوگوں کوبتاناچھوڑچکے ہیں کہ ہم جج ہیں،آپ کو شائد اس بات کا علم ہو کہ ہائیکورٹ کو سخت تھریٹ ہے، کیس کی سماعت شروع ہوئی تو ایڈیشنل پراسیکیوٹر جنرل عبدالصمد نے جواب اوررپورٹ عدالت میں پیش کرتے ہوئے کہا کہ ذمہ داروں کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی جاری ہے، فاضل بنچ نے کہا کہ پی آئی سی واقعہ میں جو کچھ ہوا وہاں جانے والوں نے سب کا منہ کالا کیا۔افسوس یہ ہے کہ ہائیکورٹ کاکوئی جج وکلاء کاکیس سننے کوتیار نہیں،فاضل جج نے کہا کہ ہسپتال میں وکلاء کو جانے کی ضرورت کیا تھی؟جسٹس مظاہر علی اکبر نقوی نے کہا کہ ہمیں یہ بتاتے ہوئے شرم آتی ہے کہ ہم جج ہیں، جس پر اعظم نذیر تارڑ نے کہا کہ یہ ہماری ناکامی ہے، ملک بھر کی بار ایسوسی ایشنز نے پی آئی سی واقعہ پر عدالت کے سامنے معافی مانگی ہے،تسلیم کرتے ہیں کہ یہ بار کی مکمل ناکامی ہے۔ فاضل جج نے ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل پنجاب سے استفسارکیا کہ بتائیں کہ پولیس نے آپ کوبتایا ہے کہ ان (وکلاء)کو روکا کیوں نہیں گیا؟جس پر عدالت کوبتایا گیا کہ وکلاء ڈیڑھ گھنٹے میں پی آئی سی پہنچے، پورا راستہ وکلاء پر امن رہے، پھر بعد میں حالات خراب ہوئے۔اصغر گل ایڈووکیٹ نے کہا کہ صدر بار میں منع کرتا رہا تھا مگر خواتین نے اس کے سر پر چوڑیاں پھینکیں، جس پر جسٹس سید مظاہر علی اکبر نقوی نے کہاتو کیا ہو گیا ایسا کرنے سے اس کی مردانگی میں کمی آ گئی؟ فاضل جج کے ریمارکس پر کمرہ عدالت میں قہقہہ بلندہوا۔فاضل بنچ نے ایڈووکیٹ جنرل پنجاب کو بھی آج 18دسمبر کو طلب کرلیاہے،فاضل بنچ نے چیف سیکرٹری، ہوم سیکرٹری اور آئی جی پنجاب کو18دسمبرکوذاتی حیثیت میں طلب کرتے ہوئے ایڈووکیٹ جنرل کو فیصلے پر عمل درآمد کی ہدایت بھی کی ہے جبکہ پی آئی سی کے سربراہ کوبھی طلب کرلیاہے۔

وکلا،کلنک کا ٹیکہ

مزید : صفحہ آخر