کالعدم تنظیموں کے زیر حراست افراد کیس کی سماعت 16 جنوری تک ملتوی

    کالعدم تنظیموں کے زیر حراست افراد کیس کی سماعت 16 جنوری تک ملتوی

  



پشاور(نیوزرپورٹر) پشاور ہائی کورٹ نے مبینہ طور پر کالعدم تنظیموں سے روابط اور دیگر الزامات میں حراست میں لیے گئے افراد کوحراستی مراکز میں قید کرنے سے متعلق کیسز کی سماعت 16جنوری تک کیلئے ملتوی کردی جبکہ مردان سنٹرل جیل کے انٹرنمنٹ سنٹر میں قید 19 افراد سے متعلق سپرنٹنڈنٹ جیل مردان سے جواب طلب کرلیا، گزشتہ روزجسٹس محمد ابراہیم خان اور جسٹس ناصر محفوظ پر مشتمل دورکنی بنچ نے شبیرحسین گگیانی ایڈوکیٹ اور فرمان اللہ سیلاب ایڈوکیٹ کی وساطت سے حراستی مراکز میں قید افراد سے متعلق دائر رٹ درخواستوں کی سماعت کی، دوران سماعت عدالت کو بتایا گیا کہ ان افراد کو مختلف علاقوں سے گرفتار کیا گیاجن میں 19افراد اس وقت سنٹرل جیل مردان کے انٹرنمنٹ سنٹر میں قید ہیں جن سے رشتہ داروں نے ملاقاتیں بھی کی ہیں تاہم اب تک یہ معلوم نہ ہوسکا کہ انہیں کس جرم میں حراست میں لیا گیا ہے جبکہ یہ افراد گزشتہ کئی سالوں سے حراست میں ہیں۔ دورکنی بنچ نے سپرنٹنڈنٹ سنٹرل جیل مردان اور دیگر فریقین کو نوٹس جاری کرکے 16جنوری تک جواب طلب کرلیا جبکہ دیگر متعلقہ کیسز پربھی 16جنوری کو سماعت ہوگی۔

مزید : پشاورصفحہ آخر