درگئی‘ متحدہ اپوزیشن اور ٹریڈ یونین کا بے روزگاری کیخلاف مظاہرہ کا شیڈول

      درگئی‘ متحدہ اپوزیشن اور ٹریڈ یونین کا بے روزگاری کیخلاف مظاہرہ کا ...

  



درگئی (نمائندہ خصوصی)ملاکنڈ کی متحدہ آپوزیشن جماعتوں اور ٹریڈ یونین نے ٹیکس نفاذ، مہنگائی اور بڑھتے ہوئے بے روزگاری کے خلاف احتجاجی مظاہروں کے شیڈول کا اعلان کردیا۔ 23دسمبر کو تحصیل تھانہ بائیزئی، 30دسمبر کو تحصیل بٹ خیلہ اور 6جنوری کو سخاکوٹ میں احتجاجی مظاہرے ہونگے۔ سلیکٹڈ حکمرانوں نے غریب عوام سے جینے کا حق چھین لیا ہے اسلئے اس نا اہل حکومت کو مذید وقت دینا ملک و قوم کیساتھ ظلم و نا انصافی ہو گی۔ اس بات کا اعلان متحدہ اپوزیشن جماعتوں ملاکنڈ کے رہبر کمیٹی کے اجلاس جو کہ ضلعی رہبر کمیٹی کے چیئرمین مولانا سلمان تاثیر خان کے زیر صدارت سابق تحصیل نائب ناظم حاجی اعظم خان کے دفتر سخاکوٹ میں منعقد ہوا کے دوران کیا گیا جس میں عوامی نشنل پارٹی کے ضلعی جنرل سیکرٹری محمد ارشاد خان مہمند، پی پی پی کے محمد یونس خان،حاجی اعظم خان جھاڑے، جمعیت علماء اسلام کے مولانا فضل اللہ شاہ،مولانا معراج الحق، جے ٹی آئی کے جنرل سیکرٹری حبیب الرحمان، مسلم لیگ کے حاجی عبد الحکیم، قومی وطن پارٹی کے جمیل شاہ اور متحدہ ٹریڈ یونین سخاکوٹ کے صدر حمید خان لالا، جنرل سیکرٹری تاج بادشاہ سمیت ملاکنڈ کے تمام اپوزیشن جماعتوں کے ممبران کمیٹی نے شرکت کی۔ رہبر کمیٹی کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے چیئرمین مولانا سلمان تاثیر خان اور دیگر مقررین نے کہا کہ گذشتہ سال جولائی کے عام انتخابات میں عوامی مینڈیٹ کو چوری کیا گیا اور سلیکٹڈ اور نا اہل لوگوں کو حکومت دی گئی ہے جس نے ڈیڑھ سال میں ہی عوام کی چیخیں نکال دئیے ہیں جبکہ ناقص معاشی و سیاسی پالیسیوں سے دُنیا بھر میں پاکستان کی جگ ہنسائی ہورہی ہے اور ملک معاشی طور پر دیوالیہ ہوتا جارہا ہے اس لئے پاکستان کی تمام سیاسی جماعتیں اس بات پر متفق ہیں کہ سلیکٹڈ حکمرانوں کا بسترہ گول کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ ڈیڑھ سالہ اقتدار میں پٹرولیم مصنوعات سمیت کھانے پینے کی آشیاء اور دیگر ضروریات زندگی کی قیمتوں میں ہوشربا اضافہ ہوا ہے جس سے غریب آدمی خودکشیوں پر مجبور ہیں جبکہ حکمرانوں کی عیاشیاں ختم ہونے کا نام نہیں لے رہی ہے اور تبدیلی صرف حکومتی ممبران، وزراء اور سنیٹرز کے حجروں تک محدود ہے اس لئے متحدہ اپوزیشن نے سلیکٹڈ حکومت کے خاتمے تک احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ جاری رکھنے کا فیصلہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ سلیکٹڈ حکمرانوں سے نجات، مہنگائی،بے روزگاری اور ملاکنڈ ڈویژن میں ٹیکس نفاذ کے خاتمے کے لئے ملاکنڈ کے متحدہ اپوزیشن جماعتوں نے 23دسمبر کو تحصیل تھانہ بائیزئی، 30دسمبر کو تحصیل بٹ خیلہ اور 6جنوری کو سخاکوٹ میں احتجاجی مظاہروں کا اعلان کر رہے ہیں جس میں حکومت کے خلاف بھر پور قوت کا مظاہرہ کرینگے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر