پی آئی سی کیس، وزیر اعظم کا بھانجا6روز بعد بھی نہ گرفتار ہوسکا

پی آئی سی کیس، وزیر اعظم کا بھانجا6روز بعد بھی نہ گرفتار ہوسکا

  



لاہور(کرائم رپورٹر) پی آئی سی ہسپتال پر وکلا کی جانب سے حملے میں ملوث وزیر اعظم کے بھانجے حسان نیازی کو واقعہ کے 6 روز بعد بھی پولیس گرفتار نہ کر سکی، پی آئی سی واقعہ پر وکلا کے خلاف تھانہ شادمان میں دو مختلف مقدمات درج کیے گئے تھے جس پر پولیس نے کاروائی میں 81وکلاء کو گرفتار کیا۔دونوں الگ الگ مقدمات میں دہشت گردی، سرکاری املاک کو نقصان پہنچانے سمیت گیارہ دفعات شامل تھیں۔حسان نیازی کو سوشل میڈیا پر جاری ہونے والی ویڈیو سامنے آنے کے بعد مقدمے میں نامزد کیا گیا تھا۔واقعہ میں ڈاکٹرز کے خلاف کوئی مقدمہ درج نہیں کیا گیا تھا۔قبل ازیں پی آئی سی کیس میں ملوث ملزم اور پہلے سے اشتہاری ذیشان خالد ایڈووکیٹ گرفتارکرلیا گیا، معلوم ہوا ہے کہ ایڈووکیٹ ذیشان خالد دہشتگردی سمیت دیگر سنگین دفعات کے ایک مقدمے میں بھی پولیس کو مطلوب تھا،ملزم کے خلاف چند ماہ قبل ایک کیس میں ملزم کی ضمانت منظور کرنے پر معزز جج پر تشدد کا الزام ہے۔انچارج انویسٹی گیشن شمالی چھاؤنی نے اپنی ٹیم کے ہمراہ اشتہاری ملزم ذیشان خالد کو گرفتارکرلیا۔پولیس کے مطابق مزید تفتیش جاری ہے۔

پی آئی سی

مزید : صفحہ اول


loading...