ُپیپلز پارٹی ان ہاؤس تبدیلی کی مخالفت، پارلیمنٹ اپنا کردار ادا کرے: یوسف رضا گیلانی 

ُپیپلز پارٹی ان ہاؤس تبدیلی کی مخالفت، پارلیمنٹ اپنا کردار ادا کرے: یوسف رضا ...

  



ملتان (سٹی رپورٹر)سابق وزیراعظم سید یوسف رضا گیلانی نے کہا ہے کہ پیپلز پارٹی نے ہمیشہ جمہوریت اور قانون کی بالادستی کے لئے اپنا کردار ادا کیا ہے پرویز مشرف کی پھانسی کے حوالے سے بلاول بھٹو کے ٹویٹ کی تائید کرتے ہوئے کہوں گا کہ جمہوریت بہترین انتقام ہے آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع کے لئے حکومت کو اپوزیشن سے رابطہ کرنا ہو گا تاہم تفصیلی عدالتی فیصلے کا پیپلز پارٹی کے قانونی ماہرین اس کا جائزہ لے رہے ہیں اس کے بعد ہی(بقیہ نمبر28صفحہ7پر)

 پیپلز پارٹی اپنے موقف کا اظہار کر ے گی شہید ذوالفقار علی بھٹو اور شہید محترمہ بے نظیر بھٹو قتل کیس کے حوالے سے دائر کیسوں کا فیصلہ جلد از جلد کیاجائے اگر حکومت کے پاس جنوبی پنجاب صوبہ بنانے کے لئے اکثریت نہیں ہے تو اب تک حکومت نے اپوزیشن کو بھی اعتمادمیں نہیں لیا جب ان سے سوال کیا گیاکہ مولانا فضل الرحمن نے کہا ہے کہ حکومت ایک ماہ مزید برقرار رہے گی جس پر یوسف رضا گیلانی نے کہا کہ رہبر کمیٹی میں ہونے والے فیصلے میرے پاس امانت ہیں یہ پہلا موقع ہے کہ چیئرمین بلاول بھٹو کی خواہش پر محترمہ بے نظیر بھٹو کی 12ویں برسی کا اجتماع گڑھی خدابخش کی بجائے لیاقت باغ راولپنڈی میں ہو گا ان خیالات کاا ظہار انہوں نے پیپلز سیکریٹریٹ بہادر پور (بلاول ہاؤس) میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا پیپلز پارٹی جنوبی پنجاب کے صدر مخدوم احمد محمود، سینئر نائب صدر خواجہ رضوان عالم، جنرل سیکریٹری نتاشہ دولتانہ، فیڈرل کونسل کے رکن عبد القادر شاہین، جنوبی پنجاب کے رہنما نفیس احمد انصاری، ڈویژنل صدر خالد حنیف لودھی، وہاڑی کے ضلعی صدر محمود حیات ٹوچی خان، وویمن ونگ جنوبی پنجاب کی صدر شازیہ عابد، سٹی صدر ملک نسیم لابر بھی اس موقع پر موجود تھے سید یوسف رضا گیلانی نے کہا کہ لیاقت باغ تاریخی مقام ہے جہاں لیاقت علی خان اور محترمہ بے نظیر بھٹو کی شہادت ہوئی یوم تاسیس کے موقع پر بلاول بھٹو نے کشمیر جبکہ بے نظیر بھٹو کی برسی کے موقع پر وہ 27دسمبر کو لیاقت باغ میں جلسہ سے خطاب کریں گے جس میں پورے ملک سمیت جنوبی پنجاب کے کارکن گڑھی خدابخش جیسے جذبے کی طرح شریک ہوں گے اس جلسہ میں بلاول بھٹو پارٹی منشور کے مطابق آئندہ کے لائحہ عمل کا اعلان کریں گے ایک سوال کے جواب میں یوسف رضا گیلانی نے کہا کہ پرویز مشرف کی سزائے موت کے فیصلے پر جو ٹویٹ بلاول بھٹو نے جاری کیا ہے وہ اس کی تائید کرتے ہیں البتہ اس کیس کا تفصیلی فیصلہ آنے پر معلوم ہوگا کہ کیا پرویز مشرف کو اپیل کا حق حاصل ہے یا نہیں ان سے سوال کیا گیا کہ گذشتہ 12سال کے دوران میں ملک میں پیپلز پارٹی کی حکومت بھی رہی ہے لیکن ابھی تک بے نظیر بھٹو کیس کاکوئی فیصلہ سامنے نہیں آیا جس پر یوسف رضا گیلانی نے کہا کہ شہید ذوالفقار علی بھٹو کا عدالتی قتل ہوا جس پر پیپلز پارٹی کی جانب سے ریفرنس دائر کیا گیا اسی طرح شہید محترمہ بے نظیر بھٹو کا کیس بھی زیر التواء ہے ہمارا مطالبہ ہے کہ دونوں کیسوں کا فیصلہ جلد از جلد کیاجائے قوم فیصلہ سننا چاہتی ہے ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ گذشتہ ڈیڑھ سال کے دوران حکومت عوام کی توقعات پر پورا نہیں اتر رہی ملک شدید مہنگائی کی زد میں ہے گیس، بجلی اور پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ ہو چکا ہے زیادہ بہتر ہوتا کہ سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں اضافہ کیا جاتا مگر حکومت اپنے منشور پر عمل نہیں کر رہی آرمی چیف کی توسیع کے حوالے سے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ تفصیلی عدالتی فیصلے کا پیپلز پارٹی کے قانونی ماہرین اس کا جائزہ لے رہے ہیں اس کے بعد ہی پیپلز پارٹی اپنے موقف کا اظہار کر ے گی یوسف رضا گیلانی نے کہا کہ میں بھی قومی اسمبلی کا سپیکر رہاہوں سپیکر کا رول ہمیشہ غیر جانبدار ہوتا ہے کیونکہ وہ ہاؤس کا کسٹوڈین ہوتا ہے جس کی ذمہ داری ہے کہ وہ اپنے ممبران کے حقوق کا تحفظ کرے میں نے بطور سپیکر شیخ رشید احمد، حاجی محمد بوٹا مرحوم، شیخ طاہر رشیداور چوہدری شجاعت حسین کے پروڈکشن آرڈر جاری کئے ملتان جیل میں حاجی محمد بوٹا اور شیخ طاہر رشید سے ملاقات کی جہاں مجھے گارڈ آف آنر پیش کیا گیا البتہ شیخ رشید سے بہاولپور جیل میں ملنے جانا تھا لیکن اگر وہ کہتے تو میں ضرور ان سے ملنے جاتا یوسف رضا گیلانی نے مزید کہا کہ آصف علی زرداری کی طبیعت ٹھیک نہیں ہے اسی لئے انہیں طبی بنیادوں پر ضمانت دی گئی ہے اب ان کا علاج جاری ہے اور وہ ڈاکٹروں کی ہدایت پر عمل کریں گے انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی نے کبھی بھی ان ہاؤس تبدیلی کا مطالبہ نہیں کیا ان ہاؤس تبدیلی کے لئے پارلیمنٹ ہی اپنا کردار ادا کرسکتی ہے حکومت کیونکہ ناکام ہو چکی ہے اس لئے تبدیلی کی باتیں کی جارہی ہیں جنوبی پنجاب صوبے کے بارے میں ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ گذشتہ دنوں ایک صوبائی وزیر کا بیان پڑھاہے کہ ہمارے پاس صوبے کے لئے اکثریت نہیں ہے سوال یہ پیداہوتا ہے کہ اگر حکومت صوبہ بنانے کی پوزیشن میں نہیں تھی تو انہوں نے صوبہ بنانے کا عوام سے وعدہ کیوں کیا تھا دوسری طرف حکومت کی جانب سے صوبے کے قیام کے حوالے سے اپوزیشن سے بھی رابطہ نہیں کیا گیا اور نہ ہی کوئی مزاکرات کئے ہیں پیپلز پارٹی نے سینیٹ میں دوتہائی اکثریت سے سرائیکی صوبے کا بل پاس کرایا حالانکہ قومی اسمبلی میں ہمارے پاس اکثریت نہیں تھی یہ الگ بات ہے کہ اسی وجہ سے میری چھٹی ہوئی اور میں قبل از وقت گھر آگیا جب ان سے سوال کیا گیا کہ آپ نے بطور وزیراعظم جنرل کیا نی کی مدت ملازمت میں جو توسیع کی تھی وہ کس قانون کے تحت تھی جس پر یوسف رضا گیلانی نے کہا کہ اس وقت قانون سازی کے بارے میں کوئی بات نہیں کی گئی اگر ہمیں کہاجاتا تو ہم قانون سازی کر لیتے انہوں نے کہا کہ مولانا فضل الرحمن نے اگر حکومت کے بارے میں کہا ہے کہ وہ ایک ماہ میں ختم ہو جائے گی تو اس کے بارے میں مولانا فضل الرحمن سے ہی پوچھا جاسکتا ہے البتہ رہبر کمیٹی کے اجلاس میں ہم اس بات کا حلف لیا ہے

کہ یہاں ہونے والے فیصلے ہمارے پاس امانت ہیں ہم اجلاس سے باہر جاکر اس پر کوئی بات نہیں کریں گے تو میں اس فیصلے کا پابند ہوں جہاں تک حکومت کی پرفامنس کا تعلق ہے تو یہ بات واضح ہے کہ عوام موجودہ حکومت سے کسی طرح بھی مطمئن نہیں ہیں۔شھید جمہوریت محترمہ بے نظیر بھٹو ایک عہد ساز شخصیت تھیں انہوں نے ہمیشہ ملکی و عوامی مفاد میں جمہوریت کا علم تھامے رکھا اسی جمہوری سفر میں جام شھادت نوش کیا 27 دسمبر کو محترمہ بے نظیر بھٹو کی برسی کی تقریب میں ہر سال کی طرح اس دفعہ بھی پیپلزپارٹی کے عہدیداران و کارکنان عقیدت کے جزبہ سے سرشار ہو کر جوق در جوق شامل ہوں گے اس سال 27 دسمبر کو بی بی شھید کی برسی کی مرکزی تقریب چیئرمین پاکستان پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری کی خواہش کے مطابق بی بی شھید کی جائے شھادت پنڈی میں ہو گی جنوبی پنجاب سے ہر ضلع سے قافلے پنڈی جائیں گے اور برسی کے اس جلسہ میں جنوبی پنجاب کے جیالوں کی بہت بڑی تعداد اس بات کی عکاسی کرے گی کہ جنوبی پنجاب اب بھی پیپلزپارٹی کا گڑھ ہے 27 دسمبر کو پنڈی میں ہونے والا جلسہ پنجاب کی سیاست کا رخ بدل دے گا چیئرمین پاکستان پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری گزشتہ ماہ جنوبی پنجاب کے دورہ پر آئے تھے اس موقع پر ملتان ڈویڑن، بہاولپور ڈویڑن اور ڈیرہ غازی خان ڈویڑن کی تنظیموں نے بہت کامیاب پروگرام کئے اور ہم آج اس موقع پر انہیں مبارکباد دیتے ہیں جنوبی ہنجاب کے بعد مظفرآباد میں یوم تاسیس کا بہت بڑا جلسہ ہوا جس میں چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے خطاب کیا اس کے بعد چیئرمین پاکستان پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری ہر صوبائی ہیڈ کوآرٹر میں جارہے ہیں اور پیپلزپارٹی کو ہر جگہ عوامی پذیرائی مل رہی ہے کیونکہ موجودہ تبدیلی سرکار نے عوام کو مایوس کیا آج بجلی تیل گیس سمیت ضروریات زندگی کی تمام اشیا مہنگی ہیں عوام سے روزگار چھینا جا رہا ہے اس لئے عوام کی مایوسی بجا ہے عوام سمجھ گئی ہے کہ واحد جمہوری جماعت پیپلزپارٹی ہے جو انکے مسائل حل کر سکتی ہے اس لئے آئیندہ حکومت پیپلزپارٹی کی ہو گی ان خیالات کا اظہار سابق وزیراعظم سید یوسف رضا گیلانی اور پیپلزپارٹی جنوبی پنجاب کے صدر و سابق گورنر پنجاب مخدوم سید احمد محمود نے پیپلز سیکریٹریٹ بلاول ہاوس میں شھید جمہوریت محترمہ بے نظیر بھٹو کی 12 ویں برسی کی تیاریوں کے حوالے سے جنوبی پنجاب کے جنرل اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر انہوں نے مزید کہا کہ پرویز مشرف کو سزا پر یہی کہیں گے جو شھید جمہوریت محترمہ بے نظیر بھٹو بھی کہتی تھیں اور آج ہمارے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے بھی کہا ہے کہ جمہوریت بہترین انتقام ہے اجلاس سے سینئر نائب صدر جنوبی پنجاب خواجہ رضوان عالم، جنرل سیکرٹری جنوبی پنجاب نتاشہ دولتانہ کوآرڈینیٹر جنوبی پنجاب عبدالقادر شاھین، ایم این اے مہر ارشاد سیال، ایم اپی اے سید علی حیدر گیلانی، ایم پی اے شازیہ عابد، چوہدری سرور، خالد حنیف لودھی، بابو نفیس انصاری، ڈاکٹر جاوید صدیقی، آصف خان دستی، محمود حیات ٹوچی خان، ملک شاہ رخ، میاں کامران عبداللہ مڑل، ملک نسیم لابر، ملک بلال کھر، وقاص گورچانی، امداد اللہ عباسی، مظہر چوہان، قاضی احسان، راو ساجد علی، اے ڈی بلوچ، مظہر پہوڑ، شیخ غیاث الحق ایڈووکیٹ، سید عارف شاہ، ملک بشیر احمد، جمیل نورانی، مرزا نزیر بیگ و دیگر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آج شھید جمہوریت کی برسی کے حوالے سے منعقدہ اجلاس میں ہمیں جو خبر ملی کہ پرویز مشرف کو سزائے موت کی سزا سنا دی گئی ہے یہ اس بات کا ثبوت ہے کہ جمہوریت کا سفر حق و سچ کا سفر ہے آمریت کل بھی مردہ باد تھی آج بھی مردہ باد ہے ہمارے قائدین شھید ذوالفقار علی بھٹو، شھید جمہوریت محترمہ بے نظیر بھٹو نے عوام کی فلاح و بہبود کیلئے جمہوری روایات کو ہمیشہ اولیت دی قائد جمہوریت آصف علی زرداری کو بھی جمہوریت کا پرچار کرنے پر ہمیشہ غیر جمہوری ہتکنڈوں کا استعمال کر کے ناجائز مقدمات میں پھنسایا گیا آج کے دن ہم آصف علی زرداری کیلئے دعا گو ہیں کہ اللہ پاک انہیں صحت دے مزید کہا کہ 27 دسمبر کو ہم سب بہت بڑے قافلوں کی صورت میں پنڈی جائیں گے اور اپنے قائد چیئرمین پاکستان پیپلزپارٹی بلاول بھٹو کا خطاب بھی سنیں گے اور شھید اجلاس میں جنوبی پنجاب کے ڈویڑنل و ضلعی صدور جنرل سیکریٹری، سیکرٹری انفارمیشن، ممبرز دی ای سی، ممبرز فیڈرل کونسل، ممبرز صوبائی کونسل، الائیڈ ونگز کے صوبائی صدر جنرل سیکرٹری اور سیکرٹری انفارمیشن سمیت سابق ضلعی صدر حبیب اللہ شاکر اللہ شاکر ایڈوکیٹ نے، ڈویڑنل سیکرٹری انفارمیشن ایم سلیم راجا، چوہدری یاسین، شاہ محمد چنڑ، نیاز سومرو، خواجہ عمران، نعیم شہزاد بھٹی،ملک ندیم اختر، راضیہ رفیق، صائمہ عامر، شہناز لودھی، شگفتہ حبیب، سمیت بڑی تعداد میں پارٹی عہدیدران نے شرکت کی۔ سابق وزیر اعظم سید یوسف رضا گیلانی نے کہا ہے کہ ادارے آئینی حدود میں کام کریں تو تصادم کی صورت حال پیدا نہ ہو گی اور ملک بھی بہتری کی طرف سفر کرے گا ہمارے نوجوان ہمارا سرمایہ اور مستقبل کے صدر وزیر اعظم ہیں معاشی استحکام کے بغیر ملکی ترقی ممکن نہیں ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ شب بہاولپور روڈ بی سی جی چوک پر لمزلے جنڈ کالج کی سالانہ تقریب سے بطور مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے کیا وائس چانسلر بہاؤالدین زکریا یونیورسٹی منصور اکبر کنڈی،سینیٹر رانا محمودالحسن،ملک اخترکالرو،ڈاکٹر راشد قمر راؤ بھی مہمانان میں شامل تھے سی ای او لیجنڈکالج میاں نوید احمد فرید،ڈپٹی ایم ڈی میاں خاور فرید نے اپنے خطاب میں کالج کی تعلیمی خدمات کے حوالے سے اظہار خیال کیا تقریب سے خطاب کرتے ہوئے سید یوسف رضا گیلانی نے کہا کہ میرا تعلق علم دوست خاندان سے ہے خاندان گیلانیہ نے خطہ میں مسلمانوں کو حصول علم کے لیے تعلیمی ادارے قائم کئے اور وہ ادارے آج بھی قائم دائم ہیں انہوں نے کہا کہ میں نے اپنے دور اقتدار میں ایک ارب کی خطیر رقم سے بی زیڈ یو کے طلباء کے لیے یوسف رضا گیلانی سکالر شپ دیا جس سے 100طلباء کو بیرون ملک اعلی تعلیم کے مواقع ملے انہوں نے مزید کہا کہ نوجوان کل کے لیڈر ہیں ملک کو دوہی اہم ایشوز درپیش ہیں معیشت اور امن وامان کے ساتھ ساتھ انتہا پسندی شامل ہے ملک سے غربت اور جہالت کو تعلیم کے زریعے ہی ختم کیا جا سکتا ہے وائس چانسلر منصور اکبر کنڈی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایک طالبعلم کی پہلی اور سب سے اچھی درسگاہ ماں ہے طلباء اپنے اور ملک کے روشن مستقبل کے لیے حصول تعلیم کی طرف توجہ دیں لیڈر شپ کے لیے حوصلہ ایمانداری اور عاجزی ضروری ہیں انہوں نے کالج کی کم وقت میں نمایاں کامیابیوں کو سراہا سینیٹر رانا محمودالحسن نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان پر مشکل وقت ہے انشاء اللہ جلد ٹل جائے گا طلبہ اپنی تعلیم کی طرف توجہ دیں اور اپنے ملک والدین کا نام روشن کریں تقریب میں طلباء نے مختلف ٹیبلوز،خاکے اور پروگرامز بھی پیش کئے جبکہ طلباء میں اسناد،کیش پرائز اور شیلڈز بھی تقسیم کی گئیں تقریب میں معظم شہزاد،ڈاکٹر عمار،ڈاکٹر الیاس نے بھی شرکت کی۔

یوسف رضاگیلانی

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...