عمران خان کے کوالالمپور نہ جانے کے فیصلے کے بعد ملائیشین وزیراعظم مہاتیر محمد کا شاہ سلمان کو ٹیلیفون ، کیا بات چیت ہوئی ؟ سب سے بڑی خبر آ گئی

عمران خان کے کوالالمپور نہ جانے کے فیصلے کے بعد ملائیشین وزیراعظم مہاتیر ...
عمران خان کے کوالالمپور نہ جانے کے فیصلے کے بعد ملائیشین وزیراعظم مہاتیر محمد کا شاہ سلمان کو ٹیلیفون ، کیا بات چیت ہوئی ؟ سب سے بڑی خبر آ گئی

  



ریاض (ڈیلی پاکستان آن لائن )میڈیا میں یہ خبریں گردش کر رہی ہیں کہ وزیراعظم عمران خان کے دورہ ملائیشیاءء کی راہ میں سعودی دباو آ گیاہے جس کے باعث انہیں کوالالمپور سمٹ میں شرکت کا فیصلہ منسوخ کرنا پڑا اور انہوں نے ملائیشین ہم منصب مہاتیر محمد کو ٹیلیفون کر کے شرکت نہ کرنے کی اطلاع دی  تاہم عرب نیوز نے ذرائع سے دعویٰ کیاہے کہ ملائیشین وزیراعظم مہاتیر محمد نے سعودی بادشاہ شاہ سلمان سے ٹیلیفونک رابطہ کیاہے ۔

عرب نیوز نے اپنی رپورٹ میں کہاہے کہ ”شاہ سلمان کو گزشتہ روز ملائیشین وزیراعظم مہاتیر محمد کی کال موصول ہوئی جس دوران سعودی فرمانروا نے اسلامی تعاون تنظیم کے توسط سے مشترکہ اسلامی اقدام کی اہمیت پر زور دیا ۔“سعودی بادشاہ شاہ سلمان اور مہاتیر محمد نے ٹیلیفونک گفتگو کے دوران دونوں ممالک کے درمیان تعلقات پر بات چیت کی اور مختلف شعبوں میں تعلق کو مزید مضبوط بنانے کیلئے مواقعوں پر مشاورت کی ۔

یاد رہے کہ ملائیشین وزیر اعظم کے دفتر کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان نے مہاتیر محمد سے ٹیلیفونک رابطے میں 18 سے 21 دسمبر تک ہونے والے کوالا لمپور سمٹ میں شرکت نہ کرنے پر افسوس کا اظہار کیا۔ مہاتیر محمد نے کانفرنس میں شرکت نہ کرنے کے حوالے سے اطلاع دینے پر عمران خان کو سراہا، اس سمٹ میں عمران خان نے اسلامی دنیا کے مسائل کے حوالے سے گفتگو کرنا تھی۔

اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ پاکستان میں میڈیا کی جانب سے یہ خبریں دی جارہی ہیں کہ کوالا لمپور سمٹ دراصل او آئی سی کے متبادل تنظیم سامنے لانے کیلئے کرایا جارہا ہے، جو غلط ہے۔ کوالالمپور سمٹ دراصل غیر سرکاری قدم ہے جس کی ملائیشین حکومت بھرپور حمایت کرتی ہے ، اس کا ایسا کوئی مقصد نہیں ہے کہ کوئی نیا اسلامک بلاک تشکیل دیا جائے۔ یہ ایسا پلیٹ فارم نہیں ہے جس میں مذہب یا مذہبی معاملات کو ڈسکس کیا جائے بلکہ یہ مسلم امہ کے مسائل پر فوکس کرتا ہے۔

مزید : عرب دنیا


loading...