پی ٹی آئی کور کمیٹی  کا اداروں کے درمیان ہم آہنگی بڑھانے کے لئے کردار ادا کرنے کا فیصلہ

  پی ٹی آئی کور کمیٹی  کا اداروں کے درمیان ہم آہنگی بڑھانے کے لئے کردار ادا ...
  پی ٹی آئی کور کمیٹی  کا اداروں کے درمیان ہم آہنگی بڑھانے کے لئے کردار ادا کرنے کا فیصلہ

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ حکومت قانون اور آئین کی بالادستی پر یقین رکھتی ہے،اداروں کے درمیان کسی قسم کا تصادم پاکستان کے مفاد میں نہیں،وزیراعظم کی زیر صدارت پی ٹی آئی کور کمیٹی کے اجلاس میں سابق صدر پرویز مشرف کیس سے متعلق عدالتی فیصلے کا جائزہ لیا گیا اور آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی مدت ملازمت میں توسیع کے معاملے پر بھی مشاورت کی گئی۔

میڈیارپورٹس کے مطابق  پی ٹی آئی کور کمیٹی نے اداروں کے درمیان ہم آہنگی بڑھانے کے لئے کردار ادا کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔دوسری جانب کھاد کی قیمتوں میں اضافہ کے معاملے پر وزیراعظم عمران خان کی ہدایت پر 6 رکنی کمیٹی تشکیل دے دی گئی، کمیٹی کھاد کی قیمتوں میں کمی کے لئے سفارشات مرتب کرے گی، کمیٹی کا پہلا اجلاس 20 دسمبر کو طلب کر لیا گیا۔ وفاقی وزیر نیشنل فوڈ خسرو بختیار اور مشیر تجارت کمیٹی میں شامل ہیں جبکہ وفاقی وزیر منصوبہ بندی،وزیر توانائی اور پٹرولیم ڈویژن کےحکام بھی کمیٹی کےممبران ہوںگے۔

اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ حکومت قانون اور آئین کی بالادستی پر یقین رکھتی ہے لیکن اداروں کے درمیان کسی قسم کا تصادم پاکستان کے مفاد میں نہیں ہے، ادارے اپنے آئینی اور قانونی دائرہ اختیار میں رہتے ہوئے فرائض سر انجام دیں، حکومت آئینی اور قانونی ذمہ داریوں کی ادائیگی میں معاونت کو یقینی بنائے گی۔وزیراعظم نے کہا کہ ہمیں اتحاد یکجہتی سے قومی مسائل کو حل کرنا ہوگا،بیرونی قوتیں پاکستان کو کمزور کرنے کے لئے جن سازشوں میں مصروف ہیں ان میں ناکامی ہو گی، افواج پاکستان نے ملک کو پر امن بنانے کے لئے لازوال قربانیاں دیں،ہمیں اتحاد اور یکجہتی سے قومی مسائل کو حل کرنا ہوگا۔ذرائع کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے وزرا کو عدالتوں کے فیصلوں پر بیانات دینے سے روک دیا۔

کور کمیٹی اجلاس کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے  وزیر اعظم کی معاون خصوصی ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ حکومت کو ریاست کا مفاد مقدم ہے اور ہم نے ہر حال میں قانون کے ساتھ  ہی کھڑے ہونا ہے۔  ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ کور کمیٹی کو عدالتی فیصلے پر تفصیلی بریفنگ دی گئی ہے۔ ہماری قانونی ٹیم پرویز مشرف کے خلاف فیصلے پر ترجیحات کو دیکھے گی جس کے بعد ہی حکومت موقف سامنے آئے گا۔انہوں نے کہا کہ ریاست کا مفاد ہمیں ہر حال میں مقدم ہے اور ہم نے ہر حال میں قانون کیساتھ ہی کھڑے ہونا ہے۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان کے دورہ ملائیشیا کے حوالے سے مختلف قسم کی قیاس آرائیاں کی گئیں تاہم وزیر اعظم نے اپنا دورہ منسوخ ہونے پر کور کمیٹی کو محرکات سے آگاہ کر دیا۔ مسلم امہ کا اتحاد اس وقت اہم ترین ضرورت ہے اور وزیر اعظم مسلم ممالک کو اکھٹا کرنا چاہتے ہیں۔فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ پاکستان کسی بھی ملک کے مفادات کے ساتھ کھڑا ہونا نہیں چاہتا، پاکستان امہ کے مفاد اور ہم آہنگی کے لیے کلیدی کردار ادا کرنا چاہتا ہے۔انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن کا معاملہ پارلیمنٹ نے طے کرنا ہے اور اتفاق رائے نہ ہونے کی وجہ سے یہ معاملہ تاخیر کا شکار ہو رہا ہے تاہم وزیر اعظم نے پارلیمانی کمیٹی کو مسئلے کے حل کا دوبارہ ٹاسک دیا ہے اور انہوں نے ہدایت کی ہے کہ کسی ایک نام پر اتفاق کر لیا جائے

مزید : اہم خبریں /قومی