حکومتی ہاؤسنگ سکیم سے 40سے زائد صنعتوں کو فائدہ ہو گا: ناصر حمید خان 

      حکومتی ہاؤسنگ سکیم سے 40سے زائد صنعتوں کو فائدہ ہو گا: ناصر حمید خان 

  

 لاہور(سٹی رپورٹر) لاہور چیمبر آف کامرس اینڈانڈسٹری کے سینئر نائب صدر ناصر حمید خان، سٹیٹ بینک آف پاکستان کے ڈپٹی چیف مینیجر کاشف شہزاد اور دیگر ماہرین نے حکومت پاکستان کی ہاؤسنگ فنانس سکیم سے متعلق آگاہی سیشن سے خطاب کرتے ہوئے توقع ظاہر کی ہے کہ اس کے دور رس نتائج برآمد ہونگے، یہ سکیم نہ صرف عوام کا اپنے گھر کا خواب پورا کرنے میں مدد دے گی بلکہ اس سے تعمیراتی شعبہ اور اس سے وابستہ صنعتیں بھی ترقی کریں گی۔ فیصل بینک کے سید مظہر ارسلان، جے ایس بینک کے خواجہ نعمان احمد و دیگر ماہرین نے بھی سیشن سے خطاب کیا۔مقررین نے سکیم کے مختلف پہلوؤں پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ حکومت نے اپنے ویڑن کے مطابق عوام کو نئے مکانات کی تعمیر و خریداری کے لیے سہولیات دینے کا اعلان کیا ہے جو خوش آئند ہے، سٹیٹ بینک آف پاکستان حکومت اور نیا پاکستان ہاؤسنگ اینڈ ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے ساتھ شراکت دار ہے، تمام بینکوں کے ذریعے اس سکیم سے فائدہ اٹھایا جاسکتا ہے۔ ایک پریزنٹیشن کے ذریعے سکیم سے فائدہ اٹھانے کے لیے اہلیت کے معیار، ہاؤسنگ یونٹ کے سائز، قیمت، قرضوں کے حجم، مدت اور سکیورٹی سمیت دیگر فیچرز پر روشنی ڈالی گئی۔ لاہور چیمبر کے سینئر نائب صدر ناصر حمید خان نے سکیم شروع کرنے پر حکومت پاکستان اور معاونت پر سٹیٹ بینک آف پاکستان کو سراہا۔ انہوں نے کہا کہ اندازے کے مطابق پاکستان کو اس وقت گیارہ سے بارہ ملین ہاؤسنگ یونٹس کی قلت کا سامنا ہے، پنجاب میں رہائش کی ضروریات دیگر صوبوں کی نسبت زیادہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ سکیم میں خصوصی افراد پر توجہ دینے کے لیے بھی حکومت مبارکباد کی مستحق ہے۔انہوں نے کہا کہ ہاؤسنگ سکیم کے اجراء سے تعمیراتی شعبے سمیت چالیس سے زیادہ صنعتوں کی نشوونما میں بھی اضافہ ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ سکیم کی کامیابی کے لیے مالیاتی اداروں کے تعاون کی اشد ضرورت ہے۔ 

مزید :

کامرس -