مولانا فضل الرحمن کے چھوٹے بھائی ضیاء الرحمن کیخلاف نیب انکوائری شروع

 مولانا فضل الرحمن کے چھوٹے بھائی ضیاء الرحمن کیخلاف نیب انکوائری شروع

  

 پشاور(این این آئی)قومی احتساب بیورو(نیب) نے مولانا فضل الرحمن کے بھائی کیخلاف بھی انکوائری شروع کردی، 2007ء میں متحدہ مجلس عمل کی حکومت میں ضیاء الرحمن کو غیرقانونی طورپر پی ٹی سی ایل سے پروانشل مینجمنٹ سروس میں شامل کیا گیا، چیئرمین نیب نے باقا عد ہ انکوائری کیلئے احکامات جاری کردئیے،جولائی میں ڈپٹی کمشنر کراچی تعیناتی پر بھی تنازع کھڑا ہوگیا تھا۔ تفصیلات کے مطابق قومی احتساب بیورو خیبرپختونخوا نے سربراہ جمعیت علما اسلام مولانا فضل الرحمن کے چھوٹے بھائی ضیاء الرحمن کیخلاف غیرقانونی طورپر پروانشل مینجمنٹ سر وس میں شامل ہونے پر تحقیقات کا آغاز کردیاہے۔نیب ذرائع کے مطابق افغان کمشنریٹ کے حوالے سے ایک کیس کی انکوائری کے دورا ن انکشاف ہوا کہ سابق کمشنر افغان مہاجرین کی صوبائی سروس میں تعیناتی غیرقانونی طورپر ہوئی جو قوانین کی صریحاً خلاف ورزی کے زمر ے میں آتی ہے۔اسٹیبلشمنٹ قوانین کے مطابق صوبائی انتظامی سروس میں شمولیت کیلئے امتحان پاس کرنا لازمی ہے تاہم ضیا الرحمن کو قانون کی مکمل خلاف ورزی کرتے ہوئے 2007 ء میں صوبائی سروس میں شامل کیا گیا تھاجس پر چیئر مین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال نے معا ملے کی تحقیقات کا حکم دیا،ضیاء الرحمن نے 2002 ء میں ایم ایم اے حکومت سے قبل پی ٹی سی ایل میں ڈویژن انجینئر کی حیثیت سے ملاز مت کا آغاز کیا تاہم 2007ء میں اسوقت کے وزیر اعلیٰ نے گورنر کو سمری بھیجی تاکہ قوانین میں نرمی کرکے ضیاء الرحمن کو صوبائی سروس میں شا مل کرنے کی اجازت دی جائے، بعد ازاں انہیں کمشنر افغان مہاجرین سمیت دیگر اہم عہدوں پر بھی تعینات کیا گیا۔

ضیاء الرحمن انکوائری

مزید :

صفحہ اول -