تہذیب وثقافت کے فروغ میں ریڈیو کا مؤثر کردار ہے: ارشد خان 

تہذیب وثقافت کے فروغ میں ریڈیو کا مؤثر کردار ہے: ارشد خان 

  

پشاور(سٹاف رپورٹر)خیبر پختونخوا کے محکمہ اطلاعات و تعلقات عامہ کے سیکرٹری ارشد خان نے کہا کہ صوبہ خیبر پختونخوا تاریخی ثقافت و دلفریب سیاحت سے مالا مال ہے اور انہی خصوصیات کو اجاگر کرنے کے لئے قومی اور علاقائی میڈیا کا کردار بہت اہمیت کا حامل ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے محکمہ اطلاعات و تعلقات عامہ خیبرپختونخوا کے اطلاعات آفس خیبرپختونخوا ہاؤس اسلام آباد  میں ایف ایم ریڈیو کے پراجیکٹ کی فیزیبیلٹی کے حوالے سے کیے گئے دورے کے موقع پر کیا۔ انہوں نے اس موقع پر ریڈیو کی اہمیت کو اجاگر کرتے ہوئے کہا کہ تہذیب و ثقافت کے فروغ میں ریڈیو کا مؤثر کردار ہے، ریڈیو آج بھی خبر رسانی کا تیز، سستا اور آسان ترین ذریعہ ہے۔ ہنگامی حالات اور آفات کے دوران عالمی سطح پر اہم کردار ادا کرنے والا  ریڈیو  معاشروں کی سماجی زندگیوں میں بھی اہمیت کا حامل ہے۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ ٹیکنالوجی میں ڈھالا جانے والا ریڈیو دنیا بھر میں لاکھوں، کروڑوں انسانوں  کے لیے خبر رسانی کے اہم ترین ذرائع میں سے ایک کی خصوصیت کو برقرار رکھے ہوئے ہے۔ اس موقع پر انہوں نے صوبائی اطلاعات آفس خیبر پختونخواہاؤس اسلام آباد میں  پختونخوا ریڈیو کے قیام کی افادیت بیان کرتے ہوئے کہا کہ اس سے خیبر پختونخوا کی تاریخی ثقافت، مقامی زبانوں، تہذیب اور سیاحت کے فروغ میں مدد ملے گی۔ جبکہ اس ریڈیو کے قیام سے ملکی اور غیر ملکی سیاحوں کو خیبر پختونخواہ کی سیاحت کے حوالے سے بروقت معلومات اور رہنمائی بھی مل سکے گی اس کے ساتھ ساتھ صوبے میں جاری مختلف  ترقیاتی و تعمیراتی کاموں اور  صحت و تعلیم کے لیے حکومت خیبر پختونخوا کی جانب سے اٹھائے گئے منفرد اقدامات کی تفصیلات بھی قومی سطح تک  پہنچائی جا سکیں گے۔ انہوں نے کہا کہ اسلام آباد اور اس کے گرد و نواح میں خیبرپختونخواسے تعلق رکھنے والوں کی ایک کثیر تعداد آباد ہے جن کے لیے پختونخوا ریڈیو ایک تحفہ ہو گا۔  اس موقع پر سیکرٹری اطلاعات و تعلقات عامہ خیبر پختونخوا  کو اسلام آباد میں تعینات انفارمیشن آفیسر سید بلال حسین نے دفتر کے مختلف شعبوں پر بریفنگ دی جس پر سیکرٹری اطلاعات وتعلقات عامہ نے اطمینان کا اظہار کیا اور کارکردگی کو سراہا۔ انہوں نے کہا کہ محکمہ اطلاعات و تعلقات عامہ کو درپیش مسائل کے حل  کے لئے وہ دن رات کوشاں ہیں 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -