خیبر میڈیکل یونیورسٹی اور آئی پی اینڈڈی ایم کے مابین مفاہمتی یا داشت پر دستخط 

خیبر میڈیکل یونیورسٹی اور آئی پی اینڈڈی ایم کے مابین مفاہمتی یا داشت پر ...

  

پشاور(سٹی رپورٹر) خیبر میڈیکل یونیورسٹی (کے ایم یو) انسٹی ٹیوٹ آف پیتھالوجی اینڈریسرچ  میڈیسن (آئی پی اینڈ ڈی ایم) پشاور اور سرجیکل ڈیپارٹمنٹ، حیات آباد میڈیکل کمپلیکس (ایچ ایم سی) پشاور نے تشخیصی خدمات، تحقیق اور پوسٹ گریجویٹ تعلیم کے باہمی تعاون کے لئے مفاہمت کی یادداشت پر دستخط کردیئے ہیں۔یہ مفاہمت نامہ عام طور پر سائنس اور تعلیم بالخصوص ملک کے باہمیس مشترکہ تشخیصی مسائل کے حل میں مدد دے گا اور متعلقہ مضامین میں کثیر الضابطہ شعبوں کے مابین بہتری لائے گا۔ڈائریکٹر کے ایم یو۔آئی پی اور ڈی ایم ڈاکٹر آصف علی اور اسسٹنٹ پروفیسر بریسٹ سرجری سرجیکل یونٹ ایچ ایم سی ڈاکٹر امجد علی نے اپنے متعلقہ اداروں کی جانب سے ایم او یو پر دستخط کیے جبکہ پروفیسر ڈاکٹر ضیاء الحق وی سی کے ایم یو، پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم گنڈا پور رجسٹرار کے ایم یو اور ڈین خیبر گرلز میڈیکل کالج پروفیسر ڈاکٹر زاہد امان بھی اس موقع پر موجود تھے۔مذکورہ مفاہمتی یادداشت میں کے ایم یو اور ایچ ایم سی نے وقتاً فوقتاً اتفاق رائے کے ساتھ ساتھ تحقیق اور تعلیم کے شعبوں میں تشخیصی مہارتوں اور باہمی دلچسپی کی تکنیک کے تبادلے کے لئے سائنسی، تکنیکی اور تعلیمی تعاون کے پروگرام کو آگے بڑھانے پر اتفاق کیا ہے۔ مفاہمتی یادداشت کے نتیجے میں متعلقہ شعبوں میں تدریس، تحقیق، پوسٹ گریجویٹ تعلیم اور ترقی کے لئے سائنسی و تکنیکی عملے کی تربیت کا تبادلہ یقینی بنایاجائے گا۔ جب کہ اس یادداشت کے ذریعے طلباء اور عملہ کے باہمی مفاد کے مشترکہ کانفرنسوں، سیمینارز، سمپوزیم، ورکشاپس کا انعقاد بھی یقینی بنایاجائے گا۔یہ ایم او یو دونوں اداروں کو ایک دوسرے کے وسائل سے باہمی فائدہ اٹھانے کاموقع بھی فراہم کرے گا تاہم دونوں انسٹی ٹیوٹ کے ذریعہ پیش کردہ تشخیصی پیتھالوجی خدمات کے لئے معمول کے معاوضے لاگو ہوں گے۔معاہدے کے تحت ہر بایپسی (چھوٹے یا بڑے) کی مبلغ 2200 روپے قیمت وصول کی جائے گی جبکہ ER، PR، HER2 ٹیسٹ کرنے کے لیئے مبلغ 8000 روپے نرخ مقرر کیئے گئے ہیں تاہم ان نرخوں کو باہمی اتفاق رائے سے وقتا ًفوقتا ًتبدیل کیا جا سکے گا۔ یہ مفاہمت نامہ دس سال تک موثر رہے گا البتہ اگر فریقین میں سے کوئی اس معاہدے سے نکلناچاہے تو ایسی صورت میں دوسرے فریق کو چھ ماہ کی پیشگی اطلاع دینا یا پھرپہلے سے داخل شدہ پوسٹ گریجویٹ طلباء کی تربیت کی تکمیل تک یہ معاہدہ ختم کیاجاسکے گا۔ مفاہمت کی یادداشت پر عمل درآمد کے لیئے دونوں فریق رابطہ افسر مقرر کریں گے جو وقتاً فوقتا ًاجلاسوں کا انعقاد کریں گے جس میں ایسے شرائط و ضوابط پر باہمی تعاون کی تفصیلات پر اتفاق کیا جا ئے گا جو دونوں فریقین کے حق میں ہوں گے۔دونوں فریقین کے رابطہ آفیررز معاہدے پر عمل درآمد کی نگرانی کریں گے اور سالانہ پیشرفت کی رپورٹیں تیار کرکے اپنے اپنے متعلقہ اداروں کوپیش کریں گے۔ 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -