سابقہ ملکہ حسن دنیا کو کورونا وائرس سے بچانے کے لیے میدان میں آگئیں، ایسا کام کہ سب کو حیران کردیا

سابقہ ملکہ حسن دنیا کو کورونا وائرس سے بچانے کے لیے میدان میں آگئیں، ایسا کام ...
سابقہ ملکہ حسن دنیا کو کورونا وائرس سے بچانے کے لیے میدان میں آگئیں، ایسا کام کہ سب کو حیران کردیا
سورس: Facebook/@carityrrell

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) مقابلہ ہائے حسن میں شریک حسیناﺅں کے بارے میں بات ہو تو یہی ذہن میں آتا ہے کہ وہ ماڈلنگ اور اداکاری جیسے شعبوں سے وابستہ ہوں گی لیکن ایک ایسی سابق حسینہ بھی ہے جو اب کورونا وائرس سے دنیا کو بچانے کے لیے جتن کر رہی ہے۔ میل آن لائن کے مطابق اس سائنسدان لڑکی کا نام کیرینا ٹیریل ہے جو ڈاکٹر اور معلم بھی ہے اور 2014ءمیں ’مس انگلینڈ‘ کا تاج بھی اپنے سر پر سجا چکی ہے۔ 

31سالہ کیرینا ٹیریل نے مس انگلینڈ بننے کے کچھ عرصہ بعد ہی مس ورلڈ کے مقابلے میں بھی حصہ لیا تھا اور چوتھے نمبر پر آئی تھی۔ کیرینا کا والدطبیعات دان ہے جبکہ والدہ عالمی ادارہ صحت کے ساتھ کام کر چکی ہے۔ کیرینا خود آکسفورڈ یونیورسٹی کی اس ٹیم کا حصہ ہے جو کورونا وائرس کی ویکسین تیار کرنے کے لیے دن رات ایک کیے ہوئے ہے۔ کیرینا کا کہنا ہے کہ ”میرا بچپن ہی سے خواب تھا کہ دنیا کو بڑے مسائل ملیریا وغیرہ سے نجات دلاﺅں، میرا یہ خواب کورونا وائرس کی ویکسین تیار کرنے والی ٹیم کا حصہ بن کر پورا ہو رہا ہے۔ “

مزید :

ڈیلی بائیٹس -